کیا آپ کے دل کا شمار اِن 13 دلوں میں ہوتا ہے ؟

ایک قرآنی ریسرچ کے مطابق ‘اللہ تعالیٰ نے قرآن مجید میں 13 دلوں کا ذکر کیا ہے ۔ یہ 13 قسم کے لوگ ہیں ۔ آپ اللہ کی طرف سے 13 لوگوں کی تقسیم ملاحظہ کیجیے ۔

1- قلب سلیم
اللہ کی نظر میں پہلا دل قلب سلیم ہے۔یہ وہ دل (لوگ) ہیں جو کفر ، نفاق اور گندگی سے پاک ہوتے ہیں۔ یہ لوگ ذہنی اور جسمانی گندگی بھی نہیں پھیلاتے، خود بھی نفاق اور کفر سے پاک رہتے ہیں اور دوسروں کو بھی ان سے بچا کر رکھتے ہیں ۔ اللہ کو یہ دل اچھے لگتے ہیں ۔

2- قلب منیب
دوسرا دل قلب منیب ہے۔ (سورۃ الشعراء ، آیت 89)‏
یہ وہ لوگ ہیں جو اللہ سے توبہ کرتے رہتے ہیں اور اس کی اطاعت میں مصروف رہتے ہیں۔ آپ کو زندگی میں بے شمار ایسے لوگ ملیں گے جو اللہ کی اطاعت میں گم رہتے ہیں۔یہ اللہ سے ہر وقت توبہ کےخواست گار رہتے ہیں ۔ اللہ منیب لوگوں کو بھی پسند کرتا ہے۔

مزید پڑھیں: پاکستان چوک پر عالمی محفلِ حُسنِ قرات کی تیاریاں شروع

3- قلب مخبت
(سورۃ ق ، آیت 33)
تیسرا دل قلب مخبت ہے۔یہ وہ لوگ ہیں جو جھکے ہوئے ، مطمئن اور پر سکون ہوتے ہیں۔ میں نے زندگی میں عاجز لوگوں کو مطمئن اور پرسکون پایا ۔ عاجزی وہ واحد عبادت ہے ۔ جس کے بارےمیں رسول اللہ ﷺ نے فرمایا ’’جو بھی اللہ کے لیے عاجزی اختیار کرتا ہے، اللہ اسکو بلند کر دیتا ہے ۔

4- قلب وجل
چھوتھا دل قلب و جل ہے (سورۃ الحج ،آیت 54)‏ یہ وہ لوگ ہیں جو نیکی کے بعد بھی ڈرتے رہتے ہیں کہ اللہ ہماری یہ نیکی قبول کرے یا نہ کرے ۔ یہ لوگ ہر لمحہ اللہ کے عذاب سے بھی ڈرتے ہیں۔ یہ جانتے ہیں اللہ نے اپنے انبیاء کو بھی غلطیوں کی سزا دی‘ چنانچہ یہ اپنی بڑی نیکی کو بھی حقیر سمجھتے ہیں‘ اللہ کو یہ لوگ بھی پسند ہیں ۔‏

5۔ قلب تقی
پانچواں دل قلب تقی ہے،یہ وہ لوگ ہیں جو اللہ کے شعائر کی تعظیم کرتے ہیں۔ یہ ان شعائر کی عبادت کی طرح تعظیم کرتے ہیں‘ یہ لوگ اگر کسی مجبوری سے عبادت نہ کر سکیں تو بھی روزہ داروں کے سامنےکھاتےپیتے نہیں اور یہ نماز اور اذان کے وقت خاموشی اختیار کرتے ہیں‘ اللہ کو یہ لوگ بھی پسند ہیں ۔‏

6۔ قلب مہدی
چھٹا دل قلب مہدی ہے‘یہ وہ لوگ ہیں جو اللہ کے فیصلوں پر بھی راضی رہتے ہیں اور بخوشی قبول کر لیتے ہیں۔ اللہ کو یہ لوگ بھی پسند ہیں۔ زندگی میں کبھی ایسے لوگ خسارے میں نہیں ھوتے۔اللہ ان کے لیے برائی کے اندر سے اچھائی نکالتا ہے۔ لوگ ان کے لیے شر کرتے ہیں لیکن اللہ اس شر سے خیر نکال دیتا ہے‏ ۔

مزید پڑھیں: قرآنی تعلیمات سے دوری مسلمانوں کے زوال کا سبب ہے ، مولانا محمد طیب طاہری

7۔ قلب مطمئن
ساتواں دل قلب مطمئن ہے۔ یہ وہ لوگ ہیں جن کو اللہ کے ذکر سے سکون ملتا ہے۔ یہ دن رات اللہ کا ذکر بھی کرتا رہتے ہیں ہے۔ آپ بھی اگر ملال اور حزن سے بچنا چاہتے ہیں تو آپ تسبیح شروع کر دیں ۔ آپ کا دل اطمینان اور خوشی سے بھر جائے گا۔ درود شریف اور لاحول ولا قوۃ الاباللہ بہترین تسبیحات ہیں‏ ۔

8۔ قلب حئی
آٹھواں دل قلب حئی ہے،یہ وہ لوگ ہیں جو اللہ کی نافرمان قوموں کا انجام سن کر ان سے عبرت حاصل کرتے ہیں۔ کم تولنا ‘جھوٹ‘ شر پھیلانا، شرک‘ کفر اور تکبر‘ برائی کی ترویج کرنے وغیرہ کو اپنی زندگیاں سے پاک کر لیتے ہیں ۔ اللہ کی نظر میں وہ لوگ قلب حئی ہوتے ہیں اور اللہ انھیں بھی پسند کرتا ہے۔ ‏

9۔ قلب مریض
نواں دل قلب مریض ہیں یہ وہ لوگ ہیں جو شک‘ نفاق‘ بداخلاقی‘ ہوس اور لالچ کا شکار ہوتے ہیں۔ہم لوگ لالچ‘ ہوس‘ بداخلاقی‘ نفاق اور شک کو عادتیں سمجھتے ہیں ۔ جب کہ حقیقت میں یہ روح اور دماغ کی بیماریاں ہیں اور جو لوگ ان بیماریوں کا شکار ہو جاتے ہیں ۔ وہ اذیت ناک زندگی گزارتے ہیں‘‏اللہ ان لوگوں اور ان کے دلوں کو مریض سمجھتا ہے ۔ میرا دعویٰ ہے آپ اپنی زندگی میں صرف شک کا مرض پال لیں آپ چند برسوں میں دل‘ پھیپھڑوں‘گردوں اور جسمانی دردوں کی دوائیں کھانے پر مجبور ہو جائیں گے اور آپ بس شک کی عادت ترک کر دیں آپ کی ادویات کم ہونے لگیں گی‘ آزمائش شرط ہے ۔‏

10۔ قلب الاعمی
۔دسواں دل قلب الاعمی ہے۔ یہ وہ لوگ ہیں جو دیکھتے ہیں اور نہ سنتےہیں۔ یہ بےحس لوگ ہوتے ہیں۔اللہ انھیں اندھے اور بہرے لوگ کہتا ہے اور مومنوں کو حکم دیتا ہے تم بس انھیں سلام کرو اور آگے نکل جاؤ۔ انہیں سمجھانے کی کوشش کریں گے تو آپ کا بلڈ پریشر بڑھ جائے گا چنانچہ آپ بھی اللہ کی نصیحت پر عمل کریں‏ ۔

مزید پڑھیں: قرآن کی برکت

11۔ قلب اللاھی
گیارہواں دل قلب اللاھی ہے۔ یہ وہ دل ہے جو قرآن سے غافل اور دنیا کی رنگینیوں میں مگن ہے ۔ اللہ ان غافل لوگوں کو بھی پسند نہیں کرتا اور یہ بھی بالآخر عبرت کا نشان بن جاتے ہیں ۔

12۔ قلب ا لآثم
بارہواں دل قلب ا لآثم ہے۔یہ وہ لوگ ہیں جو حق پر پردہ ڈالتے اور گواہی چھپاتے ہیں‘ آپ تاریخ پڑھ لیں آپ گواہی چھپانے اور حق پر پردہ ڈالنے والے معاشروں اور لوگوں کو تباہ ہوتے دیکھیں گے‘ اللہ کو یہ لوگ بھی پسند نہیں ۔
(اٰثِمٌ قَلْبُهٗ ، سورۃ البقرہ ، آیت 283)‏

13۔ قلب متکبر
تیرہواں اور آخری دل متکبر ہوتا ہے۔ یہ لوگ تکبر اور سرکشی میں مبتلا ہوتے ہیں اور اپنی دین داری کو بھی گھمنڈ بنا لیتے ہیں یوں یہ ظلم اور جارحیت کا شکار ہو جاتے ہیں۔ کبر، اللہ کا وصف ہے، اللہ یہ وصف کسی انسان کے پاس برداشت نہیں کرتا‏ ۔ چنانچہ معاشرہ ہو‘ ملک ہو یا پھر لوگ ہوں ۔ تاریخ گواہ ہے یہ فرعون اور نمرود کی طرح عبرت کا نشان بن جاتے ہیں‘ دنیا میں آج تک کسی مغرور شخص کو عزت نصیب نہیں ہوئی‘ وہ آخر میں رسوائی اور ذلت تک پہنچ کر رہا‘ اللہ کو یہ دل بھی پسند نہیں۔
(قَلْبِ مُتَكَبِّرٍ ، سورۃ المؤمن ، آیت 35

مزید پڑھیں: حفاظ کرام کیلئے قرآن کریم یاد رکھنے کاآسان ترین نسخہ

آپ ان 13 دلوں کو سامنے رکھیں اور اپنے دل کو ٹٹول کر دیکھیں ۔ آپ کے سینے میں اگر کوئی برا دل ہے تو آپ توبہ کریں اور اچھے دل کی طرف لوٹ جائیں ۔ اللہ تعالیٰ آپ پر اپنے کرم اور فضل کے دروازے کھول دے گا ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *