ضیاءالدین یونیورسٹی نے پاکستان میں پہلی مرتبہ 3D ورچوئل ڈائسیکشن ٹیبل متعارف کرادی

ضیا الدین یونیورسٹی

کراچی : ضیاءالدین یونیورسٹی کے شعبہ اناٹومی نے پاکستان میں پہلی مرتبہ تھری ڈی ورچوئل ڈائسیکشن ٹیبل متعارف کرادی ہے جسے دنیا بھر میں اناٹومیج کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔ یہ ایک ایسا طاقتور ٹول ہے جسے یونیورسٹی میں نئی تعمیر شدہ ڈیجیٹل اناٹومی لیب میں انسٹال کیا گیا ہے۔
ضیاءالدین یونیورسٹی کے چانسلر ڈاکٹر عاصم حسین نے نئی تعمیر شدہ ڈیجیٹل اناٹومی لیب اور اناٹومیج ٹیبل کا افتتاح کیا جس سے میڈیکل کی تعلیم کے معیار میں اضافہ ہوگا اور نہ صرف پاکستان اور بلکہ ساوتھ ایشیا میں ضیاءالدین یونیورسٹی کو ٹیکنالوجی لیڈر بنانے میں مددگار ثابت ہوگا۔

اس موقع پر اعلی انتظامیہ سے خطاب کرتے ہوئے ضیاءالدین یونیورسٹی کے چانسلر ڈاکٹر عاصم حسین کا کہنا تھا کہ پاکستان میںپہلی مرتبہ تھری ڈی ورچوئل ڈائسیکشن ٹیبل متعارف کرانے کا سہرا ضیاءالدین یونیورسٹی کو جاتا ہے جس کی مدد تمام یونیورسٹی کی تمام سائٹس اور ہسپتالوں کو آپس میں کنیکٹ کیا جاسکتا ہے۔ اس سے طب کے شعبہ سے وابستہ تمام طالب علم کسی بھی ضیاءالدین یونیورسٹی کی کسی بھی سائٹ پر موجود ہوں اس ٹیکنالوجی کی مدد سے باآسانی تعلیم حاصل کرسکتے ہیں۔ ہم اس ٹیکنالوجی کی مدد سیکھنے اور سکھانے دونوں عمل کو متعارف کروارہے ہیں جو کہ ضیاءالدین سے وابستہ سب کیلئے مفید ثابت ہوگا۔

ان کا کہنا تھا کہ اناٹومیج ٹیبل جدید ترین تھری ڈی اناٹومی وژنلائزیشن اور ورچوئل ڈائسیکشن ٹول ہے جسے طب سے وابستہ دنیا کے بہت سے اداروں چاہے وہ میڈیکل کالجز یا یونیورسٹیز ہوں یا ہسپتال اپنا ہوا ہے۔ ہمیں فخر ہے کہ آج ہم بھی ان اداروں کے فہرست میں شامل ہوگئے ہیں۔

قبل ازیں تعارفی تقریب کے موقع پر ضیاءالدین یونیورسٹی کی شعبہ اناٹومی کی سربراہ پروفیسر ڈاکٹر بشری وسیم خان نے اپنے استقبالیہ خطاب میں کہا کہ ضیاءالدین یونیورسٹی اور پاکستان کی تاریخ میں یہ پہلا موقع ہے جب ہم تھری ڈی ورچوئل ڈائسیکشن ٹیبل متعارف کروارہے ہیں جو کہ تمام میڈیکل اور ڈینٹل کے طالب علموں، لیبز، ریڈیولوجیز، نرسز، سرجنز، ڈاکٹروں اور ہاوس آفیسرز کیلئے بہت مددگار ثابت ہوگا۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *