محکمہ تعلیم کا غیر قانونی بھرتی ہونیوالے اساتذہ کیخلاف کارروائی کا فیصلہ

کراچی : محکمہ اسکول ایجوکیشن نے گھوسٹ اور غیر قانونی طریقے سے بھرتی ہونیوالے اساتذہ اور غیر تدریسی عملے کی  خلاف سخت ایکشن لینے کا فیصلہ کیا ہے۔

اس ضمن میں سیکریٹری اسکول ایجوکیشن سندھ نے صوبہ بھر کے تمام ڈائریکٹرز کو محکمہ میں غیرقانونی طریقے سے بھرتی ہونیوالے اساتذہ اور غیر تدریسی عملے کی فہرست مرتب کرنے کا حکم دیا ۔

بتایا جاتا ہے کہ سیکریٹری اسکول ایجوکیشن احمد بخش ناریجو کی زیر صدارت ہونےوا لے ایک اجلاس میں کورٹ میں دائر کیسز سمیت محکمہ اسکول ایجوکیشن غیر قانونی طریقے سے بھرتی ہونے والے اساتذہ اور عملے سے متعلق اہم فیصلے کئے گئے اور سیکریٹری اسکول ایجوکیشن احمد بخش ناریجو نے سندھ کے تمام ڈائریکٹرز اسکول ایجوکیشن کو غیر قانونی بھرتی ہونے والے غیر تدریسی عملے کی ہنگامی بنیادوں پر فہرست مرتب کرنے کی ہدایت کی۔

مزید پڑھیں :چیئرمین EOBI ملازمت کے آخری روز 45 لاکھ روپے سے زائد کے چیک لے گئے

ذرائع نے بتایا کہ سیکریٹری اسکول ایجوکیشن کی ہدایت کے بعد ضلعی ایجوکیشن افسران اور تعلقہ ایجوکیشن افسران نے محکمہ اسکول ایجوکیشن میں غیر قانونی بھرتی اور غیر حاضر رہنے والے اساتذہ و گھوسٹ اساتذہ کی بھی فہرست مرتب کرنا شروع کر دی ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ یہ احکامات ایسے موقع پر دئیے گئے جب محکمہ اسکول ایجوکیشن سندھ، نے صوبہ بھر میں تدریسی اور غیر تدریسی عملے کی مرحلہ وار 37ہزار بھرتیوں کی تیاری شروع کر دی ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *