ہنڈا اٹلس کے قاتلوں کا وکیل PPP کا سینیٹ امیدوار

ہنڈا اٹلس ایکسپیریمنٹ اور چھ لوگوں کے قتل کے کیس میں شہادت اعوان ہنڈا اٹلس کے وکیل رہے ہیں۔

ہنڈا اٹلس کمپنی میں شہید ہونے والے افراد کے لواحقین نے الزام عائد کیا ہے کہ حکومت سندھ کا دہرا معیاد سامنے آیا ہے ۔جس میں  شہادت اعوان کی جانب سے ہنڈا اٹلس کی وکالت اور پھر انھیں پی پی پی کی جانب سے سینیٹر نامزد کیا جانے پر سوال نہیں اٹھا رہا ۔ سینیٹ کے ممبر تو غدار اور قاتل بھی بنتے رہے ہیں یہ تو کبھی مسئلہ ہی نہیں رہا ۔

مسئلہ تو تب ہے کہ سندھ حکومت پہلے شہادت اعوان کو سب سے مہنگا پراسیکیوٹر جنرل بنائے رکھتی ہے ۔ ہنڈا اٹلس میں تجربے کے نام پر چھ لوگوں کا قتل ہوتا ہے تو یہی وکیل ہنڈا اٹلس کا وکیل لگا دیا جاتا ہے ۔ اس تجربے کی بابت سندھ حکومت کی لیبر ڈائیریکٹریٹ ایک رپورٹ بناتی ہے جس میں سنگین انکشافات ہوتے ہیں ۔

مذید پڑھیں :ایبٹ آباد کے تعلیمی اداروں میں دہشت گردی کا خطرہ

سندھ حکومت اس رپورٹ کو بجائے عدالت میں پیش کرتی یا پبلک کرتی، دبا دیتی ہے۔ وہی وکیل جو پہلے پراسیکیوٹر جنرل رہے وہ ہنڈا اٹلس کے وکیل بنے اور پھر لیبرز کے قتل میں انڈسٹری کی مدد کرنے اور سندھ لیبر ڈائریکٹریٹ کی رپورٹ کو غلط ثابت کرنے میں اپنی پوری توانائی صرف کرتے ہیں ۔

پھر وہی پی پی پی جو قاتلوں کے وکیل سے علامتی ہی سہی دوری اختیار کرتی انھیں خیال آیا کہ انھیں سینیٹر بنا دیا جائے۔ کیا کنفلیکٹ آف انٹرسٹ صرف مزدوروں کے لئے ہوتا ہے؟ کیا سیاست اور حکومت میں اسکا گزر تک نہیں ؟ ۔

ایسے شہادت اعوانوں کی کیا خاک ترجیح ہوگی کہ قانون ساز اسمبلیوں میں مزدوروں کے حق اور تحفظ میں قوانین بنیں اور انڈسٹریز کو پابند کیا جائے کہ وہ اپنے ہاں ہیلتھ اینڈ سیفٹی کہ ریگولیشن کا نفاذ کریں ۔ بجائے ایسے کالے کرداروں کو عبرت کا نشان بنانے کے، ہم انھیں سینیٹر لگا دیتے ہیں۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *