بلوچستان میں سینیٹ کے 1 ووٹ کی قیمت 50 سے 70 کروڑ تک پہنچ گئی

senate pakistan

کوئٹہ : وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ بلوچستان میں سینیٹ کے 1 ووٹ کی قیمت 50 سے 70 کروڑ تک پہنچ گئی ہے ۔ اگر سینیٹ میں اوپن بیلٹنگ نہ ہوئی تو اپوزیشن والے روئیں گے ۔ وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ یاد رکھیں اگر سینیٹ انتخابات میں اوپن بیلٹنگ نہ ہوئی تو اپوزیشن والے روئیں گے ۔

کلر سیداں میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ بلوچستان میں سینیٹ کے ایک ووٹ کی قیمت 50 سے 70 کروڑ لگ رہی ہے، آج نہیں کئی دفعہ پہلے بھی مجھے پیسوں کے عوض سینٹ کی سیٹ بیچنے کی آفر ہوئی، سینیٹ کی سیٹ بیچنے کے لیے براہ راست اور بالواسطہ رابطے کیے گئے ۔

مذید پڑھیں :اسلامی نظام کے نفاذ کی جد و جہد کریں

ان کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی چارٹر آف ڈیموکریسی میں اوپن بیلٹ کا معاہدہ کر چکی ہیں، میں مسلم لیگ ن کے اوپن بیلٹ کے مطالبے کی تائید کر چکا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ اصل ایشو یہ ہے کہ کیا اس موجودہ سسٹم کے تحت الیکشن ہونا چاہیے یا نہیں، ووٹوں کی خرید و فروخت میں سب سے زیادہ مال مولانا فضل الرحمن نے بنایا۔

وزیراعظم کا کہنا تھا یاد رکھیں اگر سینیٹ انتخابات میں اوپن بیلٹنگ نہ ہوئی تو اپوزیشن والے روئیں گے، سیکرٹ ووٹنگ کے تحت حکومت کو اپوزیشن سے زیادہ سیٹیں مل سکتی ہیں۔ سینیٹ انتخابات میں ووٹ بیچنے کی ویڈیو کے معاملے پر وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ میرے پاس ویڈیو ہوتی تو بہت پہلے انہیں عدالت لے جا چکا ہوتا، اب معاملہ 40 کروڑ سے نکل کر 80 کروڑ کی آفر تک پہنچ چکا ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *