واٹر بورڈ کے افسر تنویر شیخ نے NICVD میں پھر ہائیڈرنٹ چلوا دیا

کرا چی : واٹر بورڈ کے افسر تنویر شیخ نے وزیر بلدیات کو ماموں بنا دیا ۔ وزیر اعلی سندھ کی ہدایت پر NICVD پر بند ہونے والا منی ہائیڈرنٹ دوبارہ چلوا دیا ۔

وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ کی ہدایت پر 23 دسمبر کو بند کیا جانے والا غیر قانونی واٹر ہائیڈرنٹ بچہ وارڈ جناح ہسپتال کے سامنے دوبارہ شروع کر دیا گیا ہے ۔ جناح اسپتال رفیقی شہید روڈ جیسی مصروف سڑک پر رات کو غیر قانونی ہائیڈرنٹ گزشتہ ڈھائی برس سے چلایا جا رہا ہے ۔لاکھوں روپے ہفتہ لے کر متعلقہ تھانہ صدر پولیس اور صدر ٹریفک سیکشن کے افسران خاموش ہو گئے ہیں جب کہ سرکاری افسر خلیل احمد مینیجر ایڈمنسٹریشن کے ساتھ مل گئے ہیں ۔

تفصیلات کے مطابق بچہ وارد جناح ہسپتال کے سامنے زیر تعمیر عمارت اور سرکاری ہسپتال کی زمین پر ٹینکر مافیا نے اپنا گڑ بنایا ہوا ہے ۔ سرکاری رہاشی اور سرکاری ہسپتال کے پانی کو غیر قانونی واٹر ہائیڈرنٹ سے دیدہ دلیری سے کراچی والوں کا پانی چوری کیا جا رہا ہے ۔ جس سے جناح ہسپتال ، ادارہ امراض اطفال ، عسکری 1,2,3 ، عمر کوٹ کالونی ، این آئی ریزیڈنسی اور دیگر علاقہ مکینوں کو سخت پانی کی قلت کا سامنا ہے ۔

مذید پڑھیں :واٹر بورڈ ڈیپوٹیشن پر آنے والے DDM نے افسران کا حق کھانا شروع کر دیا

واضح رہے کہ پچھلے 2 سالوں سے عمارت میں کام بند ہے اور واٹر ٹینکر مافیا نے قبضہ کر رکھا ہے ۔ روزانہ کی بنیاد پر سینکڑوں واٹر ٹینکرز اس سرکاری زمین سے پانی بٙھر کے باہر فروخت کرتے ہیں اور یہ غیر قانونی کام وہ بھی سرکاری زمین پر کیا جا رہا ہے ۔ جس کی بجلی بھی سرکاری طور پر لی جارہی ہے جبکہ پانی نجی سطح پر فروخت کر کے کروڑوں روہے ماہانہ اینٹھے جا رہے ہیں ۔

ذرائع کے مطابق سرکاری زمین پر 3 غیر قانونی واٹر ہائیڈرنٹس چل رہے تھے اور 4 ٹینکرز بٙھرے جا رہے تھے ۔ 5 سے 7 ملازمین کے ساتھ بھر کے گیٹ پر چوکیدار بھی موجود تھا اور ایک نیو ماڈل کی ہونڈا سیوک میں بھی دو شخص موجود تھے ۔ جب ہم نے بہت ادب و احترام سے اس ہونڈا سیوک والے شخص سے بات کی ۔ اس نے اپنا فرضی نام ذاکر شاہ بتایا اور یہ بھی بتایا کے خلیل احمد سے ملیں ۔

اس ہائیڈرنٹ پر رات کو ٹریفک پولیس اور تھانہ صدر پولیس کی جانب سے باقاعدہ نکلنے والے ٹینکروں کی سہولت کاری کی جاتی ہے ۔مذکورہ رفیقی شہید ہسپتالوں کی وجہ سے بہت مصروف سڑک ہے اور یہاں دن میں بھی سینکڑوں ٹینکر بھر کے نکالے جاتے ہیں ۔ٹینکر مافیا کو چلانے والا گریڈ 18 کا خلیل احمد مینیجر ایڈمنسٹریشن ہے ۔

مذید پڑھیں :کشمیر تجھ سے ہم شرمندہ ہیں!

واضح رہے کہ وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ کی ہدایت پر وزیر بلدیات سید ناصر شاہ کی نگرانی میں اس غیر قانونی واٹر ہائیڈرنٹ کو 23 دسمبر 2020 اینٹی تھیفٹ سیل کے افسر راشد صدیقی نے مسمار کیا تھا ۔ مذکورہ کارروائی علاقہ مکینوں کی دی گئی درخواستوں پر عمل میں آئی تھی ۔

تاہم ابھی منی ہائیڈرنٹس کے بانی تنویر شیخ نے دیدہ دلیری کی انتہا کرتے ہوئے ایک لیٹر لکھا ہے جس میں حیرت انگیز طور پر اس ہائیڈرنٹ کو واضح طور پر اجازت مرحمت کی ہے اور ساتھ ہی دیگر ڈیپارٹمنٹ کا بھی کام خود ہی کر کے کھارا پانی قرار دیکر اس کی ٹرانسپوٹیشن کی بھی اجازت دے دی ہے ۔

ذیل میں تنویر شیخ کا لیٹر دیکھا جا سکتا ہے ۔

kwsb shaikh tanwer ahmad-converted

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *