تبلیغی اجتماع میں علمائے کرام کے بیانات کا سلسلہ شروع

کراچی : تبلیغی جماعت کے زیر اہتمام کراچی کی تبلیغی کا باقاعدہ آغاز نماز جمعہ سے ہوا۔ اس سال کورونا وائرس کی وجہ سے نہ صرف اجتماع کو دو حصوں میں تقسیم کیا گیا ہے بلکہ اجتماع کو محدود کر دیا گیا ہے اور عام شہریوں کو اجتماع میں شرکت کی اجازت نہیں دی جا رہی , تبلیغی جماعت کے ذرائع کے مطابق اجتماع میں صرف وہی لوگ شرکت کر سکتے ہیں جن کے نام مقامی مساجد کی طرف سے اجتماع منتظمین کو موصول ہوئے ہیں ۔

اجتماع سے جمعہ کے بعد مولانا فہیم، بعد نماز عصر ڈاکٹر روح اللہ، مغرب کے بعد مولانا خورشید، فجر کے بعد مولانا عباد اللہ، عصر کے بعد بھائی بخت منیر، مغرب کے بعد مولانا جمال نے بیانات کئے۔ اپنے بیانات میں مبلغین نے کہا کہ سیرت طیبہ سے دوری کے سبب معاشرہ تباہ ہو رہا ہے ۔

مزید پڑھیں :سینیٹ انتخاب اور اعداوشمار!

نبی ﷺ کی سیرت کو پڑھو اور اس پر عمل کرو، اپنے بچوں، ملازمین اور ماتحتوں کو عزت دو۔ ہماری تمام پریشانیاں ہمارے اعمال کی بدولت ہیں۔ اگر سب لوگ اللہ سے توبہ کریں اوراللہ کو منالیں تو ہمارے حالات ٹھیک ہو جائیں گے۔ آج سب توبہ کریں اور آئندہ گناہ نہ کرنے کا عہد کریں۔ اللہ تعالیٰ رحیم ذات ہے، صرف ایک بار توبہ کرنے سے وہ سب کچھ معاف کر دیتا ہے۔

توبہ کا دروازہ ہروقت کھلا رہتا ہے، اللہ توبہ کو پسند کرتا ہے اپنے آپ کو اس کے سامنے جھکا کر توبہ کر لیں اور اپنی زندگیوں کو اس کے احکامات اور محمد عربی کے طریقوں کے مطابق ڈھال لیں اسی میں ہی امت کی بہتری ہے ۔

ان کا کہنا تھا کہ ہر مسلمان دوسرے کسی کو زبان سے برا نہ کہے اور دل میں برا نہ سوچے۔ اتماع کا پہلا حصہ اتوار تک جاری رہے گا، اتوار کی صبح کو اجتماعی دعا ہوگی جس کے بعد ملک اور بیرونی ملک کے لیے ہزاروں تبلیغی جماعتوں (تبلیغی وفود)کی تشکیل کی جائے گی ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *