واٹر بورڈ کے افسر راشد صدیقی نے غیر قانونی کنکشن مافیا کے 2 نیٹ ورک مسمار کر دیئے

کراچی :صوبائی وزیر بلدیات ناصر حسین شاہ کی ہدایت پر واٹر بورڈ کے اینٹی تھیفٹ سیل کے سربراہ راشد صدیقی کی سربراہی میں لیاقت آباد اور گلشن اقبال میں بڑے پیمانے پر آپریشن کر کے غیر قانونی کنکشنوں اور زیر زمین پانی کا دھندہ کرنے والی مافیا پر گرفت کر لی ۔

واٹر بورڈ کا پانی چوری کر کے زیر زمین نیٹ ورک سے انڈسٹریز کو سپلائی کی جا رہی تھی ۔ لیاقت آباد ، قاسم آباد میں لیاری ندی سے گزرنے والی واٹر بورڈ کی 33 انچ قطر لائن سے بڑے بڑے کنکشن لیئے گئے تھے ۔

غیر قانونی پانی کا دھندہ کرنے والی مافیا نے چوری شدہ پانی بڑے ٹینکوں میں ذخیرہ کر کے زیر زمین نجی طور پر بچھائی گئی لائنوں کے ذریعے سپلائی کرتی تھی ۔ جنہوں نے لیاری ندی میں قبضہ کر کے باقاعدہ پمپ ہائوس بنا رکھے تھے ۔ پانی سپلائی کے لیے ہیوی جنریٹرز اور 5 سے 6 انچ قطر کے سب مرسیبل پمپ لگائے گئے تھے ۔

مزید پڑھیں :متنازع افسر ڈائریکٹر مانیٹرنگ اینڈ ایویلیواشن کالجز تعینات

ذرائع کے مطابق لیاقت آباد ، قاسم آباد میں پانی کی چوری کا دھندہ کرنے والوں میں نیاز عرف نیازو ، اجمل اور وحید پانی چوری کا نیٹ ورک چلا رہے تھے ۔ پانی چوروں نے لیاری کو سپلائی دینے والی 33 انچ قطر کی مین لائن سے کنکشن لیے ہوئے تھے ۔

دوسری جانب اینٹی تھیفٹ سیل ٹیم نے کارروائی کرتے ہوئے گلشن اقبال چورنگی کے قریب لیاری ندی سے بھی پانی چوری اور غیر قانونی سپلائی کا بڑا نیٹ ورک پکڑا ہے ۔ امتیاز سپر اسٹور کے قریب نیپا چورنگی کو سپلائی دینے والی 33 انچ کی مین لائن سے پانی چوری کیا جا رہا تھا ۔

واٹر بورڈ کے ذرائع کے مطابق چوری شدہ پانی چار بڑے ٹینکوں میں جمع کر کے ہیوی مشینری کے ذریعے زیر زمین لائنوں سے فیڈرل بی انڈسٹریل ایریا سپلائی دیا جاتا تھا ۔ پانی چوری کے اس نیٹ ورک میں فضل کرم کے گروہ کا نیٹ ورک پایا گیا ہے ۔ واٹر بورڈ نے پانی چوری روکنے کے لئے کارروائی کرتے پوئے ہیوی مشینری، پانی کی موٹریں اور ہیوی پمپ ضبط کر لئیے ہیں ۔

الرٹ نیوز کا واٹر بورڈ کے ذرائع نے بتایا ہے کہ اینٹی تھیفٹ سیل کی ٹیم اب اگلے مرحلے میں سہراب گوٹھ کے اطراف لیاری ندی میں آپریشن کی تیاری کی جا رہی ہے ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *