جماعت اسلامی سمیت دینی جماتوں نے ہل پارک کی رہ نما مسجد کو گرائے جانے کے خلاف احتجاج کا اعلان کردیا ،

رپورٹ : اختر شیخ

ہل پارک میں تجاوزات کے خلاف آپریشن میں مسجد کوشہید کرنے پرجماعت اسلامی نے گزشہ روز احتجاج کرتے ہوئے دوبارہ مسجد کے ملبے کے قریب صفیں بچھا کر باجماعت نماز کی ادائیگی کرائی ،سٹی کونسل میں جماعت اسلامی کے پارلیمانی لیڈرجنید مکاتی درجنوں افراد کے ہمراہ ہل پارک پہنچ گئے تھے ، اس موقع پر انہوں نے میڈیا نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ مسجد میں باجماعت نماز تراویح ہوتی تھی ۔ظالموں نے اس کو شہید کردیاہے ۔

جنید مکاتی نے کہا کہ پارک میں تجاوزات کی آڑ میں مسجد کوشہید کرنا ظالمانہ اقدام ہے ۔اس ظالمانہ اقدام کے خلاف میئرکراچی ،وسیم اختر ،ڈائریکٹر اینٹی اینکروچمنٹ بشیر صدیقی ، ڈی جی پارکس آفاق مرزا کے خلاف ایف آئی آر درج کروائیں گے ۔

تھانہ فیروز آباد میں میئر پر مقدمہ درج کرانے کی درخواست دی جارہی ہے

معلوم رہے کہ جماعت اسلامی کے صدر پبلک ایڈ کمیٹی، شہری ایکشن کمیٹی کے سیف الدین ایڈووکیٹ ،جیند مکاتی سمیت دیگر نے فیروزآباد تھانے میں ایف آئی آردرج کرانے کے لئے درخواست جمع کرائی تھی جس میں ایک سے دو روز میں مقدمہ درج نہ ہونے کی صورت میں عدالت سے رجوع کیا جائے گا ۔

ادھر سوشل میڈیا پر شہریوں کی جانب سے زبر دست بحث جاری ہے جس میں بعض کا کہنا ہے کہ قبضہ کی زمین پر مسجد تعمیر نہیں کی جاسکتی جب کہ بعض کا کہنا ہے مسجد گرانا کفار اور مشرکین کا کام ہے ،فیس بک پر تبصرہ کرتے ہوئے عارف شکیل نامی شہری کا کہنا ہے کہ لگتا ہے کہ مسجد گرانے والے ہندو ہیں ،جبکہ رضا خان نامی شہر نے لکھا ہے کہ مسجد گرانے والوں پر اللہ کی لعنت ہے ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *