کراچی تجاوزات کیس میں سپریم کورٹ نے 1 ماہ میں رپورٹ طلب کر لی

رپورٹ : یاور شاہ

شہر کو تباہ و برباد کر کے رکھ دیا ہے ، چیف جسٹس آف پاکستان گلزار احمد کا سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں تجاوزات کے خاتمے سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران برہمی کا اظہار کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ سندھ کو فوری طور پر طلب کر لیا ہے ۔ جس پر مراد علی شاہ سپریم کورٹ کراچی رجسٹری پہنچ گئے۔

چیف جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں بینچ نے شہر میں قائم تجاوزات اور ٹوٹی پھوٹی سٹرکوں کی مرمت نا ہونے اور ریڈ لائن منصوبے میں رفاعی پلاٹ شامل کرنے کے حوالے سے عماعت کی، اس دوراں مختلف سرکاری عہدیداران پیش ہوئے۔

چیف جسٹس نے دوران سماعت ایڈووکیٹ جنرل سندھ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ کہاں ہیں وزیراعلیٰ سندھ انہیں فوراً عدالت بلائیں ورنہ توہین عدالت کی کاروائی شروع کر دیں گے۔

مزید پڑھیں: سپریم کورٹ کا وزیراعلیٰ سندھ کو توہین عدالت کا نوٹس

عدالت کے طلب کرنے پر وزیر اعلیٰ سندھ فوراً سپریم کورٹ کراچی رجسٹری پہنچے، دوران سماعت چیف جسٹس نے کڈنی ہیل پارک کو فوری تجاوزات سے کلیئر کرنے کا حکم جاری کیا ۔

جس کے بعد انہوں نے مذکورہ معاملے پر رپورٹ پیش کرنے کے لیے مہلت طلی کی، جس پر عدالت نے انہیں ایک ماہ کا وقت دیتے ہوئے حکم جاری کیا ہے کہ 31 جون 2021 کو کڈنی ہیل پارک کو اصل شکل میں لاکر عوام کے لیے کھول دیا جائے ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *