سپلا کا حکومتِ سندھ سے چار درجاتی فارمولہ پر اظہارِ تشکر

کراچی : کالج اساتذہ کے چاردرجاتی فارمولہ پر نظر ثانی کے دیرینہ مطالبے کی منظوری پر حکومتِ سندھ کا شکریہ ادا کرتے ہیں ۔ سپلا

سندھ پروفیسرز اینڈ لیکچررز ایسوسی ایشن کے رہنماؤں پروفیسر شاہجہاں پنھور، پروفیسر کریم اے ناریجو ، پروفیسر ، پروفیسر سید اصغر شاہ، پروفیسر منور عباس، پروفیسر محمد حنیف، پروفیسر مشتاق پھلپوٹہ، پروفیسر عبدالمنان بروہی، پروفیسر یوسف قائمخانی، پروفیسر الطاف میمن، پروفیسر الطاف کھوڑو، پروفیسر غلام رسول لاکھو، پروفیسر امیر لاشاری، پروفیسر عامر الحق، پروفیسر عدیل، پروفیسر حسن میر بحر، پروفیسر عزیز میمن، پروفیسر عبدالمجید ٹانوری، پروفیسر سید عامر علی شاہ، پروفیسر عبدالرشید ٹالانی، پروفیسر سید منور علی شاہ، پروفیسر غفران بلوچ، پروفیسر سعید ابڑو ، پروفیسر ملھار سندھی، پروفیسر ذوالفقار لغاری، پروفیسر لعل بخش کلھوڑوو دیگر نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ کالج اساتذہ کے دیرینہ مطالبے چار درجاتی فارمولہ پر نظرِ ثانی کی سمری منظور کرنے پر حکومت سندھ کا شکریہ ادا کرتے ہیں ۔

ہم وزیرِ اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ، وزیرِ تعلیم سعید غنی، مشیر قانون بیرسٹر مرتضیٰ وہاب، سندھ کابینہ ، چیف سیکریٹری، سیکریٹری کالج ایجوکیشن سمیت دیگر کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ اس نئے فارمولہ کی منظوری سے سندھ کے کالج اساتذہ میں ایک خوشی کی لہر دوڑ گئی ہے کیوں کہ یہ فورمولہ سندھ کے گیارہ ہزار سے زائد کالج اساتذہ کی ترقوں کے لیے ایک سنگِ میل کی حیثیت رکھتا ہے جس سے اب کالج اساتذہ کی ترقیاں اپنے وقت پر ہوں گی۔

مذید پڑھیں :سندھ میں اولیاء اللہ کے مزار بند مگر گڑھی خدا بخش کھلا

سپلا کے رہنماؤں نے مزید کہا کہ یہ ایک غیر معمولی فیصلہ ہے جس کا ہم تہہ دل سے خیر مقدم کرتے ہیں ، کالج اساتذہ کی ترقیاں سست روی کا شکار رہا کرتی تھیں اور ہمیں مجبوراً سڑکوں پر آنا پڑتا تھا مگر اب حکومتِ سندھ کے اس فیصلے سے گریڈ اٹھارہ سے گریڈ بیس کے درمیان اٹھارہ سو کے قریب نشستوں کے اضافہ کے ساتھ دس فیصد براہِ راست بھرتی کرنے کے سبب براہِ راست پروموشن کی نشستوں میں مزید اٖضافہ ہو جائے گا۔

سپلا کے رہنماؤں نے اس امید کا اظہار کیا کہ اس نئے نظرِ ثانی فورٹیئر فارمولہ کے حوالے سے ایس این ایز پر بھی نظر ثانی کر کے آنے والے بجٹ بک میں شامل کیا جائے۔ سپلا کے رہنماؤں نے وزیرِ تعلیم اور سیکریٹری کالجز سے پر زور مطالبہ کیا کہ ڈیپیز اور لائبریرنز کو بھی باقی صوبوں کی طرح تھری ٹیئر سے فورٹیئر فارمولہ دیا جائے تاکہ ان کی بے چینی کا بھی خاتمہ ہو سکے ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *