وفاقی تعلیمی پالیسی کیلئے صوبوں سے تجاویز طلب کر لی گئیں

اسلام آباد : وفاقی وزارت تعلیم کے سیکرٹری کی جانب سے وفاقی تعلیمی پالیسی کیلئے صوبوں سے تجاویز طلب کر لی گئیں ہیں ۔

اسکل ٹریننگ،ٹیکنیکل اینڈ ووکیشنل ایجوکیشن بھی شامل ہوں گی ، تمام صوبوں سے جنوری تک تجاویز طلب کی گئی ہیں ۔
یکساں نظام تعلیم کے بعد ملک بھر کے لیے نئی ایجوکیشن پالیسی 2021 تیار کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے جب کہ ایجوکیشن پالیسی کے لیے وفاقی وزارت تعلیم نے صوبوں سے تجاویز طلب کر لیں ہیں ۔

وفاقی وزارت تعلیم نے صوبوں سے تجاویز طلب کی ہیں کہ ایجوکیشن پالیسی 2021 میں کیا تبدیلیاں کی جائیں ۔ ایڈیشنل سیکریٹری وفاقی وزارت تعلیم محی الدین احمد وانی نے تمام صوبوں، وائس چانسلرز، ماہرین تعلیم سمیت متعلقہ حکام سے تجاویز طلب کی ہیں ۔

مزید پڑھیں : بحریہ ٹائون بغیر نقشے کے غیر قانونی تعمیرات پر 9 کیسوں میں عدالت طلب

انہوں نے کہا کہ تعلیمی معیار، اسٹینڈرز، بچوں کے لیے پرائمری اور مڈل تعلیم کے لیے عمر کی حد کیا ہونی چاہیے ، یہ سب نئی ایجوکیشن پالیسی میں شامل کیا جائے گا۔ تعلیم بالغاں، سکل ٹریننگ،سکولوں میں ٹیکنیکل اینڈ ووکیشنل ایجوکیشن بھی شامل ہوں گی۔

نئی ایجوکیشن پالیسی میں بین الاقوامی اشترک بھی شامل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ وفاقی وزارت تعلیم نے کہا کہ تمام صوبے جنوری2021 تک تجاویز بھجوائیں، ابتدائی ڈرافٹ کو فروری 2021 کے پہلے ہفتے میں حتمی شکل دی جائے گی،فروری اور مارچ میں مجوزہ پالیسی پر تمام سٹیک ہولڈرز سے دوبارہ مشاورت ہو گی،نئی ایجوکیشن پالیسی کی حتمی منظوری 23 مارچ تک لے لی جائے گی ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *