ملک طاہر قتل کیس میں MPA فیصل زمان خصوصی عدالت پیش

رپورٹ : قاضی ابوبکر

پی ٹی آئی رہنما ملک طاہر اقبال قتل کیس میں انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت میں ایم پی اے فیصل زمان کی پیشی ہوئی ، ملزم نے 21 دسمبر تک ضمانت قبل از گرفتاری میں توسیع لے لی ۔ ممبر صوبائی اسمبلی و چیئرمین اسٹینڈنگ کمیٹی لاء اینڈ ہیومن رائٹس فیصل زمان نے ملتان ہائی کورٹ سے سفری ضمانت حاصل کی تھی ۔

وزیر اعظم پاکستان عمران خان کے دیرینہ ساتھی ملک طاہر اقبال کو رواں سال پندرہ ستمبر کو ہری پور کے علاقہ کوٹیرہ میں نامعلوم حملہ آوروں نے اندھا دھند فائرنگ قتل کر دیا تھا ۔ حملے میں سابق کونسلر گل نواز بھی جاں بحق جب کہ ساجد اور یاسر نامی نوجوان شدیدزخمی ہو گئے تھے ۔

مزید پڑھیں: نقیب اللہ قتل کیس؛ استغاثہ کا گواہ بیان سے منحرف ہوگیا

سی ٹی ڈی کی ٹیم نے اس کیس کی تفتیش کے دوران ایک اجرتی قاتل کو گرفتار کیا ۔ جس نے دوران تفتیش اقرار کیا کہ اس نے ہری پور کے حلقہ پی کے 42 کے ایم پی اے فیصل زمان کے کہنے پر یہ قتل کیا ہے ۔اجرتی قاتل کے دفعہ 164 کے بیان کے بعد پولیس نے باضابطہ طور پر ایم پی اے فیصل زمان کو مقدمہ میں نامزد کیا ہے ۔

اس موقع پر عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ایم پی اے فیصل زمان کا کہنا تھا کہ میں بے گناہ ہوں اور مجھے جان بوجھ کر ایک سازش کے تحت اس  کیس میں پھنسایا جا رہا ہے. پولیس میں چھپی چند کالی بھیڑوں نے میرے مخالفین سے پیسے لے کر مجھے اس مقدمے میں پھنسایا  ہے اور بہت جلد پورے پاکستان کے سامنے پولیس میں شامل ان کالی بھیڑوں کو بے نقاب کروں گا ۔ مجھے عدالتوں پر پورا بھروسہ ہے ۔ مجھے ضرور انصاف ملے گا ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *