EFP پاکستان میں آئی ایل او ایم این ای اعلامیہ کے فروغ کے لیے نیشنل فوکل پوائنٹ مقرر

ایمپلائرز فیڈریشن آف پاکستان (ای ایف پی) کو پاکستان میں آئی ایل او ایم این ای اعلامیہ کو فروغ دینے کے لیے نیشنل فوکل پوائنٹ مقرر کیا گیا ہے۔ یہ فیصلہ آئی ایل او کنٹری آفس اسلام آباد میں منعقدہ سہ فریقی حلقہ انتخاب کے اجلاس میں کیا گیا۔ اجلاس میں کنٹری ڈائریکٹر آئی ایل او محترمہ انگریڈ کریسٹنسن، جنرل سکریٹری پی ڈبلیو ایف ظہور اعوان، عثمان راجہ ایم او پی ایچ آر ڈی، صغیر بخاری، سینئر پروگرام آفیسر آئی ایل او، ذکی احمد خان، نائب صدر ای ایف پی اور فصیح کریم صدیقی، مشیر ای ایف پی نے شرکت کی۔

قبل ازیں ای ایف پی کے مشیر فصیح الکریم صدیقی نے ایم این ای ڈی پروجیکٹ کے تین مراحل کے دوران 2015 کی جانے والی سرگرمیوں کے بارے میں آگاہ کیا اور پاکستان میں ایم این ای ڈیکلریشن کو فروغ دینے کے لیے نیشنل فوکل پوائنٹ مقرر کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

مزید پڑھیں: این ایف سی ایوارڈ کو آئی ایم ایف کے سامنے گروی رکھ دیا گیا، رضا ربانی

پاکستان ورکرز فیڈریشن (پی ڈبلیو ایف) کے جنرل سکریٹری ظہور اعوان نے تجویز پیش کی کہ مشیر ای ایف پی کو پاکستان کے لیے نیشنل فوکل پوائنٹ کے طور پر مقرر کیا جاسکتا ہے کیونکہ کثیر القومی اور قومی کاروباری اداروں اور ان کی سپلائی چین کے وسیع رابطوں کی وجہ سے اس منصوبے کو شروع کرنے کا ارادہ ہے اس کی توثیق اجلاس میں میں موجود شرکاء نے کی۔ یہ تجویز بھی پیش کی گئی کہ یہ تقرری3 سال کی مدت کے لیے ہوگی جس کے بعد فوکل پوائنٹ کو ورکرز اور حکومت کے مابین گردش کیا جائے گا۔

اجلاس میں ریفرنس کی شرائط (ٹی او آرز) کو بھی منظور کیا گیا جس کے مطابق نیشنل فوکل پوائنٹ کی سرگرمیوں میں حکومت کی وزارتوں اور ایجنسیوں، ملٹی نیشنل انٹرپرائزز، آجروں اور کارکنوں کی تنظیموں میں ایم این ای کے اعلامیہ کے اصولوں کے بارے میں مقامی زبانوں میں آن لائن معلومات اور ڈائیلاگ پلیٹ فارم بابت شعور اجاگر کیا جائیگا نیز آئی ایل او ہیلپ ڈیسک برائے کاروبار اور کمپنی یونین ڈائیلاگ کو فروغ دیا جائے گا۔

آئی ایل او کے سینئر پروگرام آفیسر صغیر بخاری نے کہا کہ انڈسٹری کے مختلف پلیئرز کے درمیان نقطوں کو جوڑنے کی ضرورت پر زور دیا تاکہ وہ اپنے کاروبار میں استحکام کے لیے ایم این ای ڈی کے اصولوں  سے فائدہ اٹھا سکیں۔ایم او پی آر آر کے عثمان راجہ نے اپنے تاثرات میں اس رائے سے اتفاق کیا کہ ایمپلائرز فیڈریشن آف پاکستان کو نیشنل فوکل پوائنٹ کے طور پر تقرری کرنے کا فیصلہ عملی اور مفید اقدام ہے۔

مزید پڑھیں: نیشنل لیبر فیڈریشن پاکستان کا EOBI کے چیئرمین کیخلاف میدان میں آنے کا اعلان

کنٹری ڈائریکٹر آئی ایل او اینگریڈ کریسٹنسن نے ای ایف پی کو نیشنل فوکل پوائنٹ کی حیثیت سے تقرری کا عملی فیصلہ لینے میں سہ فریقی شراکت داروں کو مبارکباد دیتے  ہوئے اس امید کا اظہار کیا کہ سہ فریقی شراکت دار ملٹی نیشنل و نیشنل انٹرپرائزز غیر ملکی خریداروں اور دیگر اسٹیک ہولڈرز طویل مدتی کاروباری استحکام کے وسیع تر مفاد میں ایم این ای ڈی کے اصولوں کو پاکستان میں  فروغ دینے کے لیے قریبی تعاون اور شراکت میں کام کریں گے۔

ای ایف پی کے نائب صدر ذکی احمد خان نے سہ فریقی شراکت داروں کا ای ایف پی پر اعتماد اور ای ایف پی کو نیشنل فوکل پوائنٹ کے تقرر کرنے پر ان کا شکریہ ادا کیا۔انہوں نے سہ فریقی شراکت داروں کو یقین دلایا کہ ای ایف پی پوری ذمہ داری کے ساتھ ٹی او آرز کے تحت اپنی ذمہ داریاں نبھائے گی اور شعبہ جاتی و کاروباری ایسوسی ایشنز اور متعلقہ اسٹیک ہولڈرز کو شامل کرکے ایم این ای اعلامیہ کو فروغ دے گی۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *