KUJ (دستور) کی صحافی راشد صدیق قرار کے خلاف مقدمہ آزادی صحافت پر حملہ ہے

کراچی یونین آف جرنلسٹس دستور نے جی این این ٹی وی چینل کے رپوررٹر راشد صدیق قرار کے خلاف جھوٹے اور من گھڑت مقد مے کے اندراج کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے اور اسے صحافی کو اپنی پیشہ ورانہ ذمہ داریاں ادا کرنے سے روکنے کا گھناؤنا اقدام قرار دیتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ راشد صدیق قرار کے خلاف چھوٹا مقدمہ فوری طور پر واپس لیا جائے بصورت دیگر صحافی تنظیمیں آزادئ صحافت پر اس حملے کے خلاف پرامن احتجاج کا حق محفوظ رکھتی ہیں

کے یو جے دستور کے صدد ریاض احمد ساگر  سیکرٹری محمد عارف خان اور اراکین مجلس عاملہ نے اپنے مذمتی بیان میں کہا ہے کہ پاکستان اور کراچی میں آمرانہ سوچ کے حامل کچھ حکمران اور انکے بیورو کریسی میں موجود آلہ کاروں کو آزادئ صحافت ایک آنکھ نہیں بھاتی اور وہ صحافیوں کو پیشہ ورانہ ذمہ داریاں ادا کرنے سے روکنے کے لئے  ہراساں کرنے والے دھمکی آمیز ہتھکنڈے استعمال کرتے رہتے ہیں

مزید پڑھیں: صحافیوں کیلئے تربیتی ورکشاپس، کے یو جے اور آئی بی اے میں معاہدہ

مذمتی بیان میں کہا گیا ہے کہ راشد صدیق قرار نے کے ایم سی ہیڈ آفس میں پیش آنے والے واقعے کو من وعن بیان کیا اور کے ایم سی ہیڈ آفس کی اصل صورتحال سے عوام کو آگاہ کیا جس پر ہونا تو یہ چاہیئے تھا کہ اعلیٰ حکام واقعے کا نوٹس لیتے اور کے ایم سی حکام کے خلاف قانونی اور تادیبی کارروائی کرتے لیکن الٹا اس رپورٹر کے خلاف ہی مقدمہ درج کرلیا گیا جو صریحاً آزادئ صحافت پر حملے کے مترادف ہے

کراچی یونین آف جرنلسٹس دستور آزادئ صحافت پر حملے کو ہرگز برداشت نہیں کرے گی لہذا اعلیٰ حکام رپورٹر راشد صدیق قرار کے خلاف مقدمے کو ختم کرنے کا فی الفور حکم جاری کریں اور کےایم سی حکام کے خلاف کارروائی کریں

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *