سندھ میں کاروباری مراکز 6 بجے بند کرنے کا حکم

کورونا وائرس کی دوسری لہر کے پیش نظر سندھ میں کاروباری مراکز شام 6 تک بند کرنے کا حکم نامہ جاری کردیا گیا ہے۔

اس حوالے سے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق سندھ حکومت نے سرکاری اور نجی دفاتر میں 50 فیصد اسٹاف کم رکھنے کا حکم بھی جاری کردیا۔

سندھ میں کورونا سے متعلق نئی احتیاطی تدابیر کا نوٹیفکیشن جاری کیا گیا ہے جس کے مطابق آدھے ملازمین روٹیشن کے تحت گھر سے کام کرینگے۔ سینما، مزارات اور جم بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

اس نوٹیفکیشن میں کہا گیا کہ انڈور شادیوں پر پابندی برقرار رہے گی جبکہ شادی ہالز میں صرف 200 مہمانوں تک کی اجازت دی گئی ہے۔

مزید پڑھیے: سندھ میں کورونا وائرس کے 3 ماہ میں1 لاکھ سے زائد بچوں کی پیدائش

اسی طرح ہالز کے اندر اجتماعی طور پر کھانا کھانے کی اجازت نہیں ہوگی، مہمانوں کو کھانا انفرادی طور پر پیکیٹس میں دیا جائے گا۔ جبکہ یہ تقریب 9 بجے ختم کردی جائے گی۔

واضح رہے کہ سندھ سمیت پورے پاکستان میں کورونا وائرس کے کیسز کی بڑھتی تعداد کے پیشِ نظر کئی اہم فیصلے پہلے ہی لیے جاچکے ہیں۔

اس حوالے سے توقع کی جارہی تھی کہ سندھ حکومت کاروباری مراکز کے اوقات کار میں تبدیلی کر سکتی ہے۔

تاہم اب تک تاجر برادری کی جانب سے اس فیصلے پر کسی طرح کا ردِ عمل سامنے نہیں آیا جو پچھلی ویو کے دوران بھی مراکز بند ہونے سے سندھ حکومت کے خلاف صف آرا تھی۔

اس سے قبل وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے کورونا وائرس کی دوسری لہر میں خطرناک اضافے کے بعد 26 نومبر سے 24 دسمبر تک تعلیمی ادارے بند کرنے اور 25 دسمبر سے 10 جنوری تک تمام تعلیمی اداروں میں سردیوں کی تعطیلات کا اعلان کیا تھا۔