اسکولوں میں تعطیلات کے فیصلے کو ASPSCA نے یکسر مسترد کر دیا

کراچی : آل سندھ پرائیویٹ اسکولز اینڈ کالجز ایسوسی ایشن وفاقی وزارت تعلیم کے تعلیمی ادارے ایک بار پھر بند کرنے کے اعلان کو یکسر مسترد کرتے ہوئے اپنے اصولی موقف کا اعادہ کرتی ہے کہ جب دیگر شعبہ ہائے زندگی کھلے ہوئے ہیں تو تعلیم کا شعبہ بند کرنا دانشمندانہ فیصلہ نہیں ہے ۔

ایسوسی ایشن کے چیئرمین حیدر علی نے صوبہ سندھ کے وزیر تعلیم سے اسٹیئرنگ کمیٹی کا اجلاس فوری بلانے کا مطالبہ کیا ہے تاکہ صوبے بھر کے لیے اسٹیئرنگ کمیٹی کے فیصلوں کی روشنی میں قابل عمل اور قابل قبول پالیسی وضع کی جا سکے ۔

مذید پڑھیں : سُپر اسٹار ریسلر انڈرٹیکر نے ریسلنگ کو خیر آباد کہہ دیا

انہوں نے مزید کہا کہ پہلے ہی سات مہینے ضائع ہو چکے ہیں جس کی تلافی اگلے سال تک بھی ممکن نہیں۔ ونٹر زون کے اسکول اس عمل سے بہت زیادہ متاثر ہونگے جہاں سردی کی وجہ سے مارچ تک تعلیمی عمل متاثر ہو گا ۔

سندھ بھر میں نویں اور دسویں جماعت کے رجسٹریشن اور امتحانی فارم جمع کروانے کی تاریخ اور شیڈول کا اعلان ہو چکا ہے اسکول بند ہونے کی وجہ سے یہ عمل مکمل طور پر رک جائے گا اور وقت پر امتحانی عمل ممکن نہیں ہو گا جب کہ دوسری جانب اسکولوں نے دسمبر کے مہینے میں مڈ ٹرم امتحان اور ٹیسٹ لینے کی تیاری کی ہوئی ہے ۔

انہوں نے مزید بتایا کہ دنیا جانتی ہے اور خود ذمہ داران اس بات کا کہیں مرتبہ اعتراف کر چکے ہیں کہ تعلیمی ادارے وہ واحد جگہ ہیں جہاں ایس او پی پر مکمل عملدرآمد ہورہا ہے باوجود اس کے اس شعبے پر غیر ذمہ دارانہ رویہ عقل و فہم سے بالاتر ہے ۔