نارتھ کراچی انڈسٹریل ایریامیں پانی کی قلت شدت اختیار کر گئی .

صنعتی ایریامیں پانی کا بحران شدیدسے شدیدترہوتاجارہاہے، جس سے پیداواری لاگت میں بے تحاشہ اضافہ ہوگیاہے .نارتھ کراچی ایسوسی ایشن آف ٹریڈاینڈانڈسٹری (نکاٹی)میں سرپرست اعلیٰ کیپٹن اے معیزخان کے زیرقیادت اور صدر سیدطارق رشیدکے زیرصدارت منعقدہ اجلاس سے شرکاء کاخطاب

نارتھ کراچی انڈسٹریل ایریامیں پانی کی شدیدقلت کے سبب صنعتکارذہنی عذاب سے دوچارہیں،صنعتی ایریامیں پانی کا بحران شدیدسے شدیدترہوتاجارہاہے، جس سے پیداواری لاگت میں بے تحاشہ اضافہ ہوگیاہے۔ یہ بات نارتھ کراچی ایسوسی ایشن آف ٹریڈاینڈانڈسٹری (نکاٹی)میں سرپرست اعلیٰ کیپٹن اے معیزخان کے زیرقیادت اور صدر سیدطارق رشیدکے زیرصدارت منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے شرکاء نے کہی۔

اراکین نے اپنے خطاب میں کہاکہ یہ بات سمجھ سے بالاترہے کہ کراچی میں صنعتی ترقی کی کشتی کس ڈگر ہے،ابھی تک ہم گیس کی کمی کارونارورہے تھے اب پانی کے بحران نے سراٹھالیاہے۔سوال یہ پیداہوتاہے کہ مایوسی کے جوبادل کراچی کی صنعتوں پر منڈلارہے ہیں وہ کبھی چھٹیں گے یانہیں۔

انہوں نے کہاکہ پہلے پانی کی فراہمی ہفتے میں دوسے تین مرتبہ ہواکرتی تھی لیکن اب تویہ عالم ہے کہ پورے مہینے میں محض دویاتین مرتبہ پانی سپلائی کیاجاتاہے۔انہوں نے کہاکہ پانی کی قلت کی وجہ سے نارتھ کراچی انڈسٹریل ایریامیں قائم ڈائنگ اور بلیچنگ کی صنعتیں سب سے زیادہ متاثرہورہی ہیں۔ایسالگتاہے کہ کراچی میں صنعتی ترقی کوغیرمستحکم کرناطے کرلیاگیاہے، کراچی جو پاکستان کا معاشی حب ہے اگر یہاں معاشی ترقی رک گئی تو پورے ملک پر اس کااثرپڑے گااور حکمران سوچ نہیں سکتے کہ اس کے اثرات کہاں تک پہنچیں گے۔

انہوں نے کہاکہ حکومت کی جانب سے عدم تعاون کے باعث کراچی کے متعددصنعتکار معاشی بدحالی کا شکارہوکر اپنی صنعتوں کو تالالگاچکے ہیں جو لمحہء فکریہ اور حکومت کے لئے سوالیہ نشان ہے،بہت ساری صنعتیں بندہوچکی ہیں جو باقی بچی ہیں وہ بھی پانی کے بحران کی وجہ سے بندہونے کوہیں،جس سے بے روزگاری پھیلے گی اور ارباب اختیارکے پاس پچھتاوے کے سواکچھ نہیں بچے گا۔

انہوں نے کہاکہ حیرت کی بات ہے کہ صنعتکار کسی بھی ملک کی معاشی ترقی میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں لیکن شاید حکومت وقت کو ا س سے کوئی سروکار نہیں ہے۔حکومت کو چاہئے کہ وطن عزیز کی ترقی کے پہیئے کو چلانے کے لئے کراچی کی صنعتوں کوضروریسہولیات فوری طورپر فراہم کرے،باالخصوص پانی کی فراہمی کے لئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کئے جائیں۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *