بختاور بھٹو کے سسرالیوں کے حوالے سے مشکوک آرا وائرل

اسلام آباد : ذوالفقار علی بھٹو مرحوم کی نواسی کی منگنی کے بعد اس کے سسرالیوں کے بارے مین مشکوک آرا سامنے آئیں ہیں جن کے بارے میں تاحال سسرالیوں اور خود پیپلز پارٹی نے کوئی تردید نہیں کی ہے ۔

صحافی مہتاب عزیز نے دعوی کیا ہے کہ بختاور بھٹو کا سسرالی خاندان کنفرم قادیانی ہے ۔ اس کے ہونے والے سسر یونس چوہدری نے اپنی کتاب ’’Dirt roads to Black Gold‘‘ (حال ہی میں اس کا اردو ترجمہ ’محنت سے نعمت تک‘ کے نام سے شائع کیا گیا ہے) میں خود قادیانی ہونے کا تفصیلا ذکر کیا ہے ۔

یہ پورا خاندان قادیانی ہے ۔ یونس چوہدری کا دادا چوہدری محمود اسماعیل سیالکوٹ کا رہنے والا برطانوی فوج کا ملازم تھا جو مرتد ہو کر قادیانی ہو گیا تھا ۔ اسے پہلی جنگ عظیم میں خدمات پر ساہیوال میں مربعے ملے ، جس کے بعد یہ اپنے خاندان کے ساتھ ساہیوال منقتل ہوا ۔ یونس چوہدری کا والد اسحاق چوہدری اپنے بہن بھائیوں میں سب سے بڑا تھا ۔ جس نے پاکستان ائیر فورس میں ملازمت کی اور پھر ریٹائرمنٹ کے بعد والد کی جگہ اپنے گاون کا نمبردار بنا ۔

مذید پڑھیں : رجسٹرار کو آپریٹو سوسائٹیز کا عدالتی حکم ماننے سے انکار

یونس چوہدری نے پاکستان فوج کمیشن حاصل کیا تاہم وہ ٹریننگ کے دوران ہی برطرف کر دیا گیا ۔ 1973 میں اس کا والد قادیانیت کے پرچار کے جرم میں جیل گیا ۔ جس کے بعد یہ وزٹ ویزہ پر کنیڈا فرار ہو گیا ۔ کنیڈا کے البرٹا صوبے کے شہر ایڈمنٹن میں کچھ عرصہ گزارنے کے بعد یہ امریکہ منتقل ہوا ۔ اس نے ریاست ٹیکساس میں رہائش اختیار کی ۔ 1980 میں پٹرولیم کی صنعت میں قدم رکھا اور پھر دن دُگنی رات چگنی ترقی کرتا گیا ۔ موجودہ وقت یونس چوہدری پٹرولیم، سرمایہ کاری اور مکانات کی تعمیر کے کاروبار کا بڑا نام ہے ۔ اس کے اثاثوں کی مالیت اربوں ڈالر ہے ۔

ٹیکساس کے شہر ہوسٹن میں بیت السمیع کے نام سے قادیانی مرکز اور عبادتگاہ یونس چاہدری نے اپنے پلے سے تعمیر کی ہے اور اس کے تمام اخراجات بھی یہ خود اٹھاتا ہے ۔ امریکہ میں قائم دیگر پانچ بڑے قادیانی مراکز کے اخراجات کا ذمہ بھی اسی نے اپنے سر لے رکھا ہے ۔ 2014 میں اس کی اہلیہ بشریٰ کے مرنے کے بعد اس نے اپنے اور اہلیہ کے نام پر YBC FOUNDATION کے نام سے ایک این جی او قائم کی تھی ۔

مذید پڑھیں : اہلسنت و جماعت نے بھی TLP دھرنے کی حمایت کر دی

ادھر سوشل میڈیا پر صارفین نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ قادیانیوں کے کفر پر مُہر ثبت کرنے والے ذوالفقار علی بھٹو مرحوم کی پوتی قادیانیوں کے گھر بھو بننے جا رہی ہے ۔ وہی قادیانی جو بھٹو کی پھانسی کو مرزا غلام احمد قادیانی ملعون کی پیش گوئی قرار دیتے ہیں ۔

دوسری جانب کالم نگار و محقق یونس قاسمی کا کہنا ہے کہ بختاور بھٹو زرداری کا سسر قادیانی نہیں ہے ۔ بختاور بھٹو زرداری کے سسر یونس چوہدری کے والد کو قادیانی سمجھنا خلاف تحقیق ہے ۔ محض نام کا اشتراک ہے ۔ یونس چوہدری جنہوں نے کتاب لکھی ہے اور ان کے والد قادیانی ہو گئے تھے، کوئی اور انسان ہیں اور بختاور بھٹو زرداری کے سسر یونس چوہدری اور ہیں ۔

تاہم بعض سوشل میڈیا کی رائے یہ ہے کہ فی الحال اس ایشو پر تحقیق کی جانی چاہئے اور 27 نومبر تک انتظار کر لینا چاہئے کیوں کہ 27 نومبر کو بختاور بھٹو کے سسرالی کراچی بلاول ہائوس میں آئیں گے اس دوران اس بات کی تصدیق ہو جائے گی کی واقعی وہ قادیانی ہیں کہ نہیں ہیں ۔