فرانسیسی سفیر کی ملک بدری تک TLP کا فیض آباد میں دھرنے کا اعلان

اسلام آباد : تحریک لبیک پاکستان کی جانب سے فرانسیسی سفیر کو واپس بھیجنے تک فیض آباد میں دھرنے کا اعلان کر دیا گیا ہے ۔

اس حوالے سے اتوار کی شام کو تحریک لبیک کی مرکزی  شوری کا اہم اجلاس کنٹینر پر ہوا ، اجلاس میں فرانس کے سفیر کی واپسی ، فرانس سے پاکستان کے سفارتی عملے کی واپسی اور فرانس سے مکمل تجارتی بائیکاٹ تک دھرنا جاری رکھنے پے غور کیا گیا ہے ۔

سید امین شاہ کوآرڈینیٹر رضوی میڈیا تحریک لبیک کا کہنا ہے کہ نیٹ ورک پنڈی اسلام آباد میں بند ہے ۔ پورے پاکستان سے لوگ اسلام آباد آرہے ہیں ۔ مولانا خادم حسین رضوی فیض آباد میں ہی موجود ہیں اور کارکنان ان کی ایک کال کے منتظر ہیں اس کے بعد لبیک والے پورے پاکستان میں سڑکوں پر ہوں گے ۔

مذید پڑھیں : رجسٹرار کو آپریٹو سوسائٹیز کا عدالتی حکم ماننے سے انکار

سید امین شاہ کا مزید کہنا تھا کہ اگر راولپنڈی پولیس نے شیلنگ بند نہ کی تو کراچی سے لیکر خیبر تک رسول ﷺ کی حرمت کا پہرہ دینے والوں کا پہرہ دیا جائے گا ۔

ادھر معلوم ہوا ہے کہ فیض آباد میں تحریک لیبک کے مظاہرین اور پولیس کےدرمیان جھڑپیں ہوئی ہیں ۔ وفاقی پولیس کے پاس گیس شیل ختم ہو گئے تھے ۔ پولیس کے دو اہلکار زخمی بھی ہونے کی اطلاعات ہیں ۔زخمی اہلکاروں کو ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے ۔

اسلام آباد پولیس کے ڈی آئی جی آپریشنز وقار الدین سید پولیس کی بھاری نفری کے ہمراہ زیرو پوائنٹ موجود ہیں ۔ تاکہ دھرنے کے شرکا کو آگے نہ آنے دیا جائے ۔