ملیر کے ایس ایس پی ‛ ڈپٹی کمشنر اور ایس پی ٹریفک کے اچانک تبادلوں سے شکوک و شبہات جنم لینے لگے

ضلع ملیر سے مختلف اداروں کے فرض شناس افسران کا اچانک تبادلہ سوالیہ نشان بن گیا ۔سوشل میڈیا پر شہریوں نے اس حوالے سوالات اٹھا دیئے ہیں ۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ ایس ایس پی ٹریفک ملیرطاہر نورانی ,ایس ایس پی ضلع ملیر شیراز نذیر کے بعد فرض شناس ڈپٹی کمشنر ملیر لیفِٹنٹ عابد علی کے تبادلہ کے بعد ضلع ملیر پر اللہ تعالی اپنا خصوصی کرم کرے ,کیونکہ ایماندار افسران تو سندھ حکومت کے گلے سے نیچے اترتے ہی نہیں ہیں ۔

ضلع ملیر کے مختلف اداروں کے سربراہان پر مشتعمل یہ ایک بہترین ٹیم تھی جس کی ماضی قریب میں کوئی مثال نہیں تھی ,اور ان افسران کے آپس کے بہترین رابطوں کے نتیجہ میں ملیر کے اندر ماضی کی گندگی صاف ہورہی تھی اور اداروں پر عوام کا اعتماد بڑھتا جارہا تھا ,مگر تین دن کے اندر تین ضلعی اداروں کے سربراہان کا تبادلہ بہرحال ایک سوالیہ نشان ہے ۔

ایس ایس پی ملیر شیراز نزیر کا تبادلہ اسسٹنٹ انسپکٹر جنرل آف پولیس فنانس میں کردیا گیا ۔

سید عرفان علی بہادر کا تبادلہ اے وی سی سی سے ایس ایس پی ملیر کردیا گیا ۔

سید پیر محمد شاہ کا تبادلہ ایس ایس پی اے وی سی سی کردیا گیا ۔

ایس ایس پی پیر محمد شاہ

ایس ایس پی ٹریفک طاہر نورانی کو کراچی پولیس آفس رپورٹ کرنے کی ہدایات جاری کی گئی ہیں ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *