محکمہ ٹرانسپورٹ سندھ میں 21 لاکھ روپے کے غبن کا انکشاف

کراچی : محکمہ ٹرانسپورٹ کے محکمے پی ٹی ایم اے کے رکن ویدنامیں نے 21 لاکھ روپے کے غبن کا بھانڈا پھوڑ دیا . یہ رقم 1 سال پہلے گڈز کیریئر والوں سے لی گئی تھی ، جو کہ ان کے لائسنس بنانے کی مد میں فی کس پانچ ہزار روپے کے حساب سے لی گئی ، کل 21 لاکھ روپے کی رقم ہے اور کل 426 ٹرانسپورٹرز نے یہ رقم ادا کی ۔

ایک سال کا عرصہ گزر جانے کے باوجود ابھی تک ان کو لائسنس جاری نہیں کیے گئے ، کچھ روز قبل کراچی گڈز کیریئر کے عہدے داران نے سیکرٹری ٹرانسپورٹ سے ملاقات کی اور اپنے مسائل سے آگاہ کیا تھا ۔

مزید پڑھیں: دنیا کی بدترین ٹرانسپورٹ میں کراچی کا پہلا نمبر : عالمی رپورٹ

سب سے بڑا مسئلہ انہوں نے اپنی اس رقم کا ظاہر کیا تھا ، جس پر سیکرٹری ٹرانسپورٹ نے فوری پی ٹی آئی ڈی پارلیمنٹ کے سیکٹری کو طلب کیا اور کلرک نوید کو بلایا اور اس 21 لاکھ روپے کی رقم کے بارے میں معلومات لیں ۔

کلرک نوید نے فیکٹری کے سامنے اپنے بیان میں کہا کہ جی یہ پر تمام ریکارڈ میرے پاس موجود ہے ۔ جب کہ ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ رقم سندھ بینک کرنٹ اکاؤنٹ کے ٹی سی میں جمع کی گئی ہے اور یہ رقم کو خورد برد بھی کر دیا گئی ہے جو کہ جہازوں کے کرائے میں خرچ کی گئی ہے ۔