تھانہ سعید آباد جرائم پیشہ افراد کیلئے قیام گاہ بن گیا

کراچی : سعید آباد بلدیہ ٹاؤن میں اسٹریٹ کرائم ، منشیات فروشی ، لینڈ گریبنگ ، اسمگلنگ اور گٹکا فروشی عروج پر پہنچ گئی ۔

سعید آباد پولیس اسٹیشن کا کراچی شہر کا سب سے بڑے ضلع ویسٹ میں جرائم و کرائم میں سب سے آگے ہے ، ضلع ویسٹ میں بلدیہ ڈویزن کا تھانہ سعید آباد تمام جرائم پیشہ لوگوں کے لئے پر سکون قیام گاہ بن چکا ہے ، جس کی وجہ متعلقہ پولیس و دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں نے جرائم پیشہ افراد کو اپنا مخبر بنا رکھا ہے ۔

ذرائع نے بتایا کے موجودہ ایس ایچ او کے اعلی افسران سے بہترین تعلقات ہیں اور موصوف کا کہنا ہے کہ ترقی پانے کے لئے افسران کی جھوٹی اور چھوٹی موٹی اوئے توئے برداشت کرنی پڑتی ہے۔ عملی طور پر بھی اعلی افسران کی چھوٹی اوئے توئے کے عادی ایس ایچ او سعیدآباد عمران آفریدی لکھ پتی بن گئے ۔

ولیس ودیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں نے جرائم پیشہ افراد کو اپنا مخبر بنایا ھوا ھے ان کی فرمائش پر بے گناہ افراد کو جھوٹے مقدمات میں بند کر کہ انہیں مجرم بنانے کی ترغیب دی جا رہی ھے ۔

مزید پڑھیں: جرائم کا خاتمہ پولیس کی اولین ترجیحات میں شامل ہے : طیب جان

سعیدآباد سیکٹر 12 میں حنیف شاہ شخص منشیات کا اڈہ کھلے عام چلا رھا ھے روزانہ کی بنیاد پر پولیس موبالز اور موٹر سائیکل اسکواڈ بھتہ وصول کرھا ھے حنیف شاہ کے کارندے اسرار اور نیاز دھڑلے سے چرس فروخت کر رھے ہیں ۔ اسپیشل برانچ کے اھلکار بھی منشیات کے اڈے سے اپنا حصہ لے رھے ہیں ۔

سعیدآباد تھانہ کی حدود میں دانیال موٹا اور سہیل چھاپڑا کھلے عام زھریلا گٹکا ماوا فروخت کر رھے ہیں ۔ موبائل اسٹاف اور موٹر سائیکل اسکواڈ کے اھلکار انکے سرپرست بنے ہوئے ہیں بھتہ لیکر کام کرنے کی اجازت دیدی گئی ھے ۔

سعیدآباد کی حدود میں تقریباً 50 کے قریب رکشہ چلتے ہیں جن میں چھالیہ اسمگلنگ کی جاتی ھے جو کہ یوسف گوٹھ ٹرمینل سے چھالیہ لوڈ کی جاتی ھے اور بلدیہ ٹاؤن کی حدود میں فروخت کی جاتی ھے فی رکشہ کراس کرانے کے 6000 ھزار روپے وصول کیے جا رہے ہیں ۔

مزید پڑھیں: جرائم کیخلاف DIG ایسٹ نعمان صدیقی کی کارکرگی قابل تعریف ہے : اکرام الدین

سعیدآباد کی حدود مشرف کالونی اور بھگوان گوٹھ میں لینڈ مافیا نے پنجے گاڑے ھوئے ھیں غریب لوگوں کے پلاٹوں پر پولیس کی سرپرستی میں منیر شاہ / دلدار  اور حسین مگسی نامی لینڈ گریبر قبضہ کر رھے ہیں اور پولیس افسران کو مہنگے موبائل فون سمیت دیگر تحائف بھتہ کے ھمراہ دیگر خریدا جا رھا ھے مواچھ گوٹھ میں امیر علی خاصخیلی جو کہ سیاسی پارٹی کا کارکن ھے کا بیٹا کھلے عام گٹکا ماوا فروخت کر رھا ھے ۔

پولیس جرائم کی سرپرستی میں مصروف ھے جب کہ علاقہ کی عوام ڈکیتوں کے حوالے کیا ھوا ھے ایک ایک روز میں 6 چھ وارداتیں ھو رھی ھیں تاجر برادری کے علاوہ عوام میں عدم تحفظ پھیل رھا ھے۔ نمائشی کاروائیاں کر کہ افسران کو کارکردگی ظاھر کی جا رہی ھے 2 سو کلو چھالیہ پکڑ کر 50 کلو دکھائی جاتی ھے ۔ باقی ڈیڑھ سو کلو چھالیہ غائب کر دی جاتی ھے اسی طرح گٹکا کے کارخانوں کے بجائے کیبن والوں کو پکڑ کر بند کر دیا جاتا ھے ۔

کیا یہ سب کچھ ڈی ایس پی سعیدآباد اور ایس پی بلدیہ ٹاؤن کو نظر نہیں آ رھا یا پھر خاموشی کو جرم قبول کرنا سمجھا جائے میرا کام آپ عوام تک حقائق پہنچانا تھا فیصلہ عوام نے کرنا ھے کہ ان کی نسل جرائم میں پرورش پاتی ھے اور افسران کب تک اپنے ادارے کے کرپٹ لوگوں کو سپورٹ کرتے رھینگے جو افسران کو دھوکہ دیکر عوام کو جرائم کرائم کی طرف مائل کرنے پر مجبور کر کے ھیں ۔