بینظیر بھٹو لیاری یونیورسٹی میں کورونا کیسز چھپائے جانے لگے

کراچی : بینظیر بھٹو شہید یونیورسٹی لیاری میں کورونا کے متعدد کیسز مثبت آ گئے ، انتظامیہ کی ہٹ دھرمی کی وجہ سے کیسز چھپائے جا رہے ہیں ، ملازمین میں شدید خوف و حراس پایا جا رہا ہے ۔

ذرائع کے مطابق کرونا ٹیسٹ کے حوالے سے جب لیاری یونیورسٹی رابطہ کیا گیا تو اس وقت وائس چانسلر ڈاکٹر اختر بلوچ نے صاف منع کر دیا کہ ہم ٹیسٹ نہیں کروائیں گے ۔ ہمارے پاس کوئی کیس نہیں ہے ، مگر جیسے جیسے دن گزرتے گئے اور ابتدائی علامات طلبا و طالبات اور جامعہ کی ملازمین میں پائیں گئی ہیں ۔

جس کے بعد مختلف ملازمین نے اپنا نام راز میں رکھتے ہوئے DHO سائوتھ اور وزیر اعلی ہائوس خط ارسال کئے کہ ہماری زندگیوں کو سخت خطرہ ہے ۔ آپ کورونا کے ٹیسٹ کروائیں اور جب پریشر بڑھا تو انتظامیہ راضی ہوئی اور دکھاوے کے لیئے چند افسران کے کورونا ٹیسٹ کے سیمپل لئے گئے ۔ جس میں متعدد افسران کے ٹیسٹ پازیٹو آئے ہیں ۔

مزید پڑھیں : اہلسنت و جماعت کے تحت عشاقِ رسول نے میلاد کانفرنس میں نشتر پارک بھر دیا

جن میں ایک خاتون افسر بھی شامل ہیں ، جس کے بعد یونیورسٹی میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے اور باقی اسٹاف نے ڈر کے مارے ٹیسٹ کروانے سے انکار کر دیا ہے ، جب ٹیسٹ پازیٹو آنا شروع ہوئے تو وائس چانسلر ڈاکٹر اختر بلوچ نے بات چھپا دی تو جامعہ کی کلاسز اور انتظامی امور کو جاری رکھنے کی ہدایات جاری کر دی ہیں ۔

جس کے بعد ملازمین اور طلبا و طالبات سخت بے چینی میں مبتلا ہو گئے اور وزیر اعلی سے مطالبہ کیا گیا کہ فوری میڈیکل کی اعلی ٹیمیں بھیجیں جائیں اور تمام اسٹاف اور طلبا کے ٹیسٹ کروائے جائیں تا کہ بروقت مرض کی تشخیص کر کے زندگیوں کو بچایا جا سکے ۔