اہلسنت و جماعت کے تحت عشاقِ رسول نے میلاد کانفرنس میں نشتر پارک بھر دیا

کراچی : جماعت اہلسنّت پاکستان کراچی کے امیر علامہ سید شاہ عبد الحق قادری نے کہا کہ فرانسیسی حکومت کی سر پرستی میں گستاخانہ اور اشتعال انگیز خاکے اور توہین رسالت دنیا کے امن کیلئے خطرہ ہے ۔ گستاخانہ خاکوں کی اشاعت اور پیغمبر اسلام کی توہین ہر گز آزادی اظہار نہیں بلکہ کھلی اسلام دشمنی ہے،فرانس کا بحیثیت ایک مملکت کے توہین رسالت ایک طرح کا جنگی جرم ہے ، دنیا کو عالمی جنگ کی طرف دھکیلنے کی سازش ہے ۔

حکومت پاکستان فرانس سے سفارتی تعلقات کو فوراً ختم کرے اور فرانسیسی مصنوعات کے بائیکاٹ کا سرکاری اعلان کرے، فرانسیسی سفیر کو ملک بدر کرے، حکومت کا کام صرف قرار دادِ مذمت پیش کرنا نہیں راست اقدام کرنا ہو تا ہے۔پاکستان کا میڈیا فرانسیسی مصنوعات کے تشہیری اشتہارات بند کرے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے جماعت اہلسنّت کے زیر اہتمام نشتر پارک میں منعقد ہونے والی میلاد مصطفی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ نبی کریم ﷺ تو وہ ہستی ہیں جنہوں نے دنیا کو امن دیا انہوں نے تو عرب کے اس معاشرے میں کہ جہاں قتل و غارت عام تھی،بچیوں کو زندہ درگور کر دیا جاتا تھا،جہاں انسانی حقوق کی پامالی ایک عام بات تھی اس معاشرے کو امن کا گہوارا بنایا ان کا تو ایک فرمان دنیا کو امن کی ضمانت دیتا ہے”حق دار کو اسکا حق ادا کرو“۔اس فرمان پر عمل کر لیا جائے تو کبھی دنیا کا امن خراب نہیں ہو گا۔

مذید پڑھیں : میر پور خاص بورڈ کا پری میڈیکل ، انجنیئرنگ اور سائنس گروپ کے نتائج کا اعلان

علامہ شاہ عبد الحق نے کہا کہ آج بھارت نے کشمیر میں ظلم کی انتہا کردی ہے کشمیری کرفیو کا شکار ہیں مساجد میں نماز ادا کرنے کی اجازت نہیں ہے کشمیری نوجوانوں کو شہید کیا جارہا ہے ان کی خواتین کی عصمت دری کی جارہی ہے مگر یہ سارے مظالم آج دنیا کے بیشتر ممالک کو نظر نہیں آ رہے ۔

علامہ کوکب نورانی اوکاڑوی نے خطاب میں کہا کہ نبی آخر الزماں تمام انسانیت کیلئے باعث فخر، معلم انسانیت و محسن انسانیت ہیں وہ نفرتیں مٹانے کیلئے آئے اور ان کی ذات رب کی عطا سے کائنات میں سب سے بہترین ہے ان کے حوالے سے نامناسب بات کرنا کسی ہوش مند اور ذی عقل کا کام نہیں ہو سکتا۔ ان کی گستاخی کرنے والا اور اس کی حمایت کرنے والا یقیناً بد اصل ہے۔ضرورت ہے عالم اسلام غیرت ایمانی کا تقاضے پور ے کرے۔ نشتر پارک جلسہ میں مولانا ابرار احمد رحمانی نے موجودہ حکومت پر زور دیا کہ وہ غریب عوام پر رحم کرے اور مہنگائی کو کنٹرول کرنے کے حوالے اقدامات کرے حکومت کی جانب سے عوام کیلئے ریلیف کے دعوے تو بہت کئے جاتے ہیں لیکن نتیجہ بالکل صفر ہے۔ بڑھتی ہوئی مہنگائی، غربت، افلاس، بیروزگاری جیسے مسائل اور بحرانات کے ذمہ دار اقتدار میں رہنے والوں کی ناقص حکمت عملی، سودی نظام، بیرونی قرضوں نے ملک کو تباہی کے دہانے پر پہنچا دیا ہے ۔

سربراہ سنی تحریک بلال سلیم قادری نے اپنی تقریرمیں کہا کہ ملک میں بڑھتے ہوئے بچوں، لڑکیوں کے اغوا،زیادتی اور قتل کے واقعات انتہائی افسوسناک ہیں، مسلم معاشرے میں جنسی زیادتی کے دلسوز واقعات انتہائی شرمناک اور معاشرتی گراوٹ کی بد ترین مثال ہیں۔ حکومت ایسے واقعات کی روک تھام کیلئے فوری طور پر ایسی قانون سازی کرے کہ زیادتی کے مجرموں کوسرِ عام پھانسی دے کر نشان ِعبرت بنایا جائے تاکہ کسی کو ایسے قبیح جرم کے ارتکاب کی جرات نہ ہو سکے۔
نشتر پارک جلسہ میلاد میں مقررین کا کہنا تھا کہ فرقہ وارانہ کشیدگی ملک کو عدم استحکام کرنے کی سازش لگتی ہے، صحابہ کرام و اہل ِ بیت اطہار کی اہانت کے واقعات شدید دل آزاری کا سبب، ایسے واقعات کی روک تھام اور تدارک کیلئے سنجیدہ اقدامات کیے جائیں۔ فرقہ واریت کی آگ بھڑکانے والے شر پسند عناصر اور ان کے سر پرستوں کے خلاف سخت کاورائی کی جائے۔

مذید پڑھیں : کالج ایجوکیشن ڈپارٹمنٹ عدالتی احکامات پر عمل درآمد کرنے سے گریزاں

نشتر پارک جلسہ میں علماء کرام و قائدین اہلسنّت قرادادوں کے ذریعے مطالبہ کیا کہ حکومت نے انتخابات میں وعدہ کیا تھا کہ وہ ریاست مدینہ کی طرز پر حکومت چلائیں گے تو مملکت خداداد پاکستان میں نظام مصطفی کا نفاذ کر کے کئے گئے وعدے کو پورا کریں۔ ٭ آئین پاکستان میں تو ہین رسالت کی سزا موت ہے یہ کتاب و سنت کا سپریم لا ء ہے ۔ حکومت، ادارے، سیاسی قوتوں سمیت کسی کو یہ اختیار نہیں کہ وہ اسلامی سزاؤں میں ترامیم کرنے کی کوشش کرے۔ ہم تحفظ نامو س رسالت کے قانون میں کوئی نئی تبدیلی یا اسے غیر مؤثر بنانے کیلئے اختیار کئے جانے والے کسی حربے کوہر گز برداشت نہیں کرینگے ۔

نشتر پارک میں مفتی یونس شاکر قادری،علامہ لائق سعیدی،علامہ نسیم احمد صدیقی، مولانا عاشق سعیدی،علامہ عبد الجبار نقشبندی، مولانا اشرف گورمانی، ڈکٹر عبد الوہاب قادری، نور حمزہ کے بلال عبد اللہ نے بھی خطاب کیا ۔ اس موقع پرمفتی غوث بغدادی، سید رفیق شاہ، مفتی بلال قادری، مولانا الطاف قادری، علامہ کامران قادری، علامہ اکرام المصطفٰی اعظمی،شاہ سراج الحق قادری، مفتی غلام مرتضی مہروی،قاری سعید قاسمی،مولاناالطاف امجدی،مفتی فیاض قادری، مولانا شوکت سیالوی، محمد عاطف بلو، سلیم عطاری، محمد علی شیخ، مولانا جمیل امینی، مولانا عبد الحمید معارفی، قاری ممتاز سیالوی، جاوید قادری، شفیع رانا قادری، غفران احمد، عبداللہ میمن، حافظ عمیر ترابی، مولانا عباس باروی، جنید منشی، مولانا معراج الدین اختری، میر غالب شاہ،شریف قادری، نبیل قادری، ممتاز سیالوی و دیگر بھی شریک تھے ۔

نشتر پارک میں حسب رو ایت نماز عصر اور مغرب با جماعت ادا کی گئیں

نشتر پارک کے میدان میں حسب روایت نماز عصر اور مغرب با جماعت ادا کی گئیں۔ جب کہ اسٹیج پر بھی نما ز عصر اور نما ز مغرب با جماعت ادا کی گئیں۔ سانحہ نشتر پارک کے شہدائے میلاد النبی ﷺ کی دینی، ملی، قومی، سماجی، سیاسی خدمات کو خراج عقیدت پیش کیا گیا ۔ انحہ نشتر پارک کے شہداء کی دینی، ملی،قومی، سماجی، سیاسی خدمات کو خراج عقیدت پیش کیا گیا۔

مزید پڑھیں : اُمتِ مسلمہ کو غازی علم الدین کے یومِ شہادت پر عہدِ نو کرنا ہو گا : ڈاکٹر نصیر الدین سواتی

شہداء کے ایصال ثواب کیلئے جما عت اہلسنّت پاکستان کے تحت ملک بھر میں فاتحہ خوانی اور دعائے مغفرت کی گئی۔عالم اسلام، پاکستان کی سلامتی، ترقی، خوشحالی، امن کیلئے بھی خصوصی دعائیں کی گئیں ۔ بولٹن مارکیٹ ایم اے جناح روڈ پر مرکزی جلوس میں وزیر اعلیٰ سندھ، کمشنر کراچی نے بھی شرکت کی، ایم کیو ایم، پی ایس پی، پیپلز پارٹی، مسلم لیگ فنکشنل، پی ٹی آئی، جسٹس لائرز سمیت متعدد سماجی تنظیموں اور میلاد انجمنوں نے جلوس کے راستوں میں استبالیہ،پانی و شربت کے کیمپ بھی لگائے۔

متعدد تنظیمات کے عید میلاد النبی ﷺ کے جلو س نکالے گئے

جماعت اہلسنّت پاکستان کراچی سمیت انجمن طلبہ اسلام، پاکستان سنی تحریک ، تحریک لبیک پاکستان، سنی تحریک، انجمن قمر الاسلام سلیمانیہ، انجمن انوارالقادریہ، جمعیت علماء پاکستان، سنی جماعت القراء، سنی علما ء کو نسل،برکاتی فاؤنڈیشن،مولانااوکاڑوی اکادمی العالمی،المصطفیٰ ویلفیئر سوسائٹی، شیڈ فاونڈیشن، انجمن نوجوانان اسلام،تحریک عوام اہلسنّت، بز م رضا،میمن گجراتی سپریم کونسل،پاکستان سنی موومنٹ، مرکزی انجمن جشن عید میلاد النبی، مجلس درس،جماعت سیفیہ نقشبندیہ،انجمن ضیائے طیبہ، سلطان حق باہو ٹرسٹ، تحریک لبیک اسلام، تنظیم ائمہ خطبا ء اہلسنّت، ادارہ الفیضان، صوفی فاؤنڈیشن پاکستان، صوفی غلام نبی میموریل سو سائٹی، نورالقرآن انٹرنیشنل، پاکستان فلاح پا رٹی، مصطفائی تحریک، ادارہ تحقیقات امام احمد رضا، دارالعلوم امجدیہ عالمگیر روڈ کراچی، دارالعلوم محمدیہ غوثیہ، دارالعلوم حامدیہ رضویہ گلستان جوہر، ادارہ معارف القرآن، جامعہ حنفیہ غوثیہ، دارالعلوم قادریہ رضویہ ملیر، جمعیت اشاعت اہلسنّت، تنظیم السعید، دارالعلوم غوثیہ شیرازیہ، دارالعلوم حنفیہ رضویہ، دارالعلوم نوریہ رضویہ، دارالعلوم قمر العلوم فریدیہ رضویہ، جامعۃ الاسلامیہ حنفیہ، جامع سراج العلوم نوریہ،مدرسۃ المصطفیٰ، واڈلا سید جماعت، بشر حافی فاؤنڈیشن سمیت 300 کے قریب جما عت اہلسنّت سے رجسٹر ڈ میلاد انجمنو ں اور کراچی ڈویژن کے چھ اضلاع کی مساجد، مدارس، خانقاہوں، میلاد انجمنوں کے جلوس نکالے گئے ۔