مولانا ڈاکٹر عادل خان کے قاتلوں کو فوری گرفتار کیا جائے : مفتی فیض الحق

کراچی : سابق رُکن سندھ اسمبلی و رہنما جمعیت علماء اسلام حافظ محمد نعیم شموزئی سمیت تمام علماء کرام کی سیکیورٹی بحال کی جائے ۔

حافظ محمد نعیم شموزئی جو کہ روز اول سے منشیات فروشوں کے خلاف بر سر پیکار ہیں ۔ معاشرے سے جرائم کے خاتمے کے لیئے اپنا کردار ادا کر رہے ہیں ۔ یہی وجہ ہے کہ آئے دن انہیں تھریڈ کیا جاتا ہے ۔ مگر بڑے افسوس کی بات ہے کہ تقریباً ڈیڑھ سال قبل ان کی سیکیوریٹی واپس لی گئی جو بحال نہیں کی گئی ۔

مذید پڑھیں : اتحاد تنظیماتِ مدارس نے ہڑتال کی حمایت کا اعلان کر دیا

اس دوران کمشنر کراچی ، آئی جی سندھ ، ایڈیشنل آئی جی کراچی کو متعدد بار تحریری درخواستیں دی گئیں ہیں ۔ مقامی پولیس اور رینجرز کی رپورٹس جانے کے باوجود تا حال ان کی سیکیورٹی بحال نہیں کی گئی ہے ۔ ان خیالات کا اظہار مفتی فیض الحق ناظم جمعیت علماء اسلام پی ایس 115 بلدیہ ٹاوُن ضلع غربی کراچی نےمجلس عاملہ اور یوسیز کے ذمہ داران کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

مزید پڑھیں: مولانا عادل خان کی شہادت کیخلاف متحدہ علماء محاذ کا احتجاجی اجلاس

رہنما جمعیت علماء اسلام نے مزید کہا کہ اگر حافظ محمد نعیم اور دیگر علماء کی سیکیورٹی بحال نہیں کی جاتی اور کوئی جانی نقصان ہوتا ہے تو کیس سابق چیف جسٹس ثاقب نثار ، کمشنر کراچی اور دیگر ذمہ داران کے خلاف رجسٹرڈ کیا جائے گا ۔