پاکستان میں بجلی سے چلنے والی موٹر سائیکل متعارف

کراچی : وفاقی وزیر آئی ٹی سید امین الحق نے ایزبائیک کا افتتاح کرتے ہوئے کہا کہ پبلک ٹرانسپورٹ کے بڑھتے مسائل میں ایز بائیک ایک خوشگوار اضافہ ہو گا ۔ ماحول دوست یہ بائیک خاص کر ملازمت پیشہ خواتین کیلئے بہترین سہولت بنے گی ۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ وزارت آئی ٹی عوامی خدمات اور سہولیات کے ہر منصوبے کی بھر پور سہولت کار ہے ۔ ہماری خواہش ہے کہ ڈیجیٹل پاکستان ویژن میں برقی سواریوں کا نمایاں حصہ ہو ۔

انہوں نے بتایا کہ ایز بائیک کا پائلٹ پراجیکٹ ابتدا میں اسلام آباد میں شروع کیا جائے گا ۔ اور بائیکس راولپنڈی اور اسلام آباد میں میٹرو اسٹیشنز کے اطراف میں موجود ہوں گی ۔خواتین و مرد اس بائیک کے ذریعے جہاں جائیں وہیں اسے چھوڑ سکتے ہیں ۔ جب کہ ایزی بائیک کے چارجز 5 روپے فی منٹ ہوں گے ۔

مذید پڑھیں : واٹر بورڈ کا افسر راشد ایوب 5 سالہ ایکسٹینشن کیلئے بے تاب

وفاقی وزیر نے مزید کہا کہ اسلام آباد میں الیکٹرک بائیک کے پائلٹ پروجیکٹ کی کامیابی کے بعد اس منصوبے کو ایک سال کے دوران لاہور اور کراچی سمیت تمام بڑے شہروں میں ایزی بائیک سروس فراہم کر دی جائے گی ۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ منصوبہ پاکستان کے لیے ایک گیم چینجر پروگرام ہے اور خواتین کو با اختیار کرنے کے لیے یہ ایک بہترین اقدام ہے ۔ ان بائیک سے ماحول بھی صاف ہو گا ، آلودگی کا خاتمہ اس سے ہی ممکن ہے ۔

اس موقعے پر وفاقی وزیر برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی نے کہا کہ ٹک ٹاک پر پابندی کے حوالے سے وفاقی وزیر نے کہا کہ ہم ٹک ٹاک کی پابندی کے خلاف ہیں ، مکمل ضابطوں کے ساتھ ٹک ٹالک کو کھولنے کی اجازت دی جائے گی ۔ ٹک ٹالک کی انتظامیہ کے ساتھ رابطے میں ہیں جلد اس پر پابندی ختم ہو جائے گی ۔