مولانا عادل خان کی شہادت کیخلاف متحدہ علماء محاذ کا احتجاجی اجلاس

کراچی : متحدہ علماء محاذپاکستان کے احتجاجی اجلاس میں شریک مختلف مکاتب فکر کے علماء مشائخ نے جامعہ فاروقیہ شاہ فیصل کے مہتمم اور وفاق المدارس کے مرکزی رہنما مولانا ڈاکٹر عادل خان کی شہادت کے خلاف اپنے رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے اسے حکومت کی نا اہلی اور فرقہ وارانہ و امن خراب کرنے کی امریکی، بھارتی، اسرائیلی واستعماری سازش قرار دیتے ہوئے قاتلوں کی فوری گرفتاری اور قرار واقعی سزائیں دینے کا پرزور مطالبہ کیا ۔

علماء نے مولانا ڈاکڑ عادل کو شہید ناموس صحابہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ عالم اسلام خصوصا پاکستان ایک عظیم مفکراعتدال پسند صلح جو عالم دین سے محروم ہو گیا ۔

مزیدپڑھیں: مولانا عادل شہادت پر علما کمیٹی نے جمعہ کو ہڑتال کی کال دے دی

اجلاس میں سر پرست مولانا جعفر الحسن تھانوی، بانی مولانا محمد امین انصاری، چیرمین علامہ عبد الخالق فریدی، علامہ مرتضی خان رحمانی،پ روفیسر ڈاکٹر سعید احمد صدیقی بنوری، علامہ قاضی احمد نورانی صدیقی، مولانا آزاد جمیل، علامہ روشن دین الرشیدی، مفتی محمد بخاری، مفتی اکبر شاہ ہاشمی بنوری،علامہ ڈاکٹر شاہ فیروز الدین رحمانی و دیگر نے مولانا عادل خان مرحوم کی علمی، دینی، سیاسی خدمات کو سراہتے ہوئے خراج عقیدت پیش کیا اور دعائے مغفرت کی ۔

دریں اثنا متحدہ علماء محاذ کے قائدین نے اتحاد ملت ختم نبوت فورم پاکستان کے چیرمین علامہ مرتضی خان رحمانی کی خوشد امن کے انتقال پر دلی تعزیت اور مرحومہ کے لیے دعائے مغفرت کی