کالجز کے اساتذہ عالمی یوم اساتذہ پر CM ہائوس کا گھیرائو کریں گے

کالجز کے اساتذہ عالمی یوم اساتذہ پر وزیر اعلی ہائوس کا گھیرائو کریں گے

کراچی : عالمی یوم اساتذہ پر سندھ پروفیسرز اینڈ لیکچررز ایسوسی ایشن وزیرِ اعلیٰ ہاوس کی جانب احتجاجی مارچ کر کے احتجاج ریکارڈ کروائیں گے ، ڈی جے سائنس کالج سے ریلی شروع کی جائے گی ، عرصہ دراز سے ترقیاں نہ دینے سمیت دیگر مطالبات کے تحت مظاہرہ کیا جائے گا ۔

سندھ پروفیسرز اینڈ لیکچررز ایسو سی ایشن کراچی ریجن کی جانب سے پانچ اکتوبر سلام ٹیچرز ڈے کے موقع پر ڈی جے سندھ گورنمنٹ سائنس کالج سے وزیرِ اعلیٰ سندھ ہاو س کی جانب احتجاجی مارچ کے سلسلے میں سپلا کراچی کے رہنماوں پروفیسر منور عباس، پروفیسرکریم ناریجو، پروفیسر امیر لاشاری، پروفیسر عبدالمنان بروہی، پروفیسر حسن بلوچ، پروفیسرمحمد عدیل، پروفیسر عزیز میمن، پروفیسر عبدالمجید ٹانوری، پروفیسر سید عامر علی شاہ، پروفیسر عبدالرشید ٹالانی و دیگر نے رابطہ مہم کے سلسلے میں کراچی کے مختلف کالجز کا دور ہ کرتے ہوئے اپنے خطاب میں کہا کہ کتنے افسوس کی بات ہے روڈوں پر آئے بغیر سندھ کالج اساتذہ کے مسائل حل ہوتے نظر نہیں آ رہے ۔

مذید پڑھیں : حب میں 73 سالہ شخص کی 13 سالہ یتیم بچی سے زیادتی

پانچ اکتوبر یومِ تکریمِ اساتذہ کے موقع پر کالج اساتذہ وزیرِ اعلیٰ ہاوس کی جانب احتجاجی مارچ کر کے اپنا احتجاج رکارڈ کروائیں گے۔ سپلا کے رہنمائوں نے مزید کہا کہ اساتذہ معاشرہ ساز ہوتے ہیں ہمیں سڑکوں پر آنے کا شوق نہیں ہے مگر مجبوراً سڑکوں پر آنا پڑ رہا ہے، حکومت کی سنجیدگی کا عالم یہ ہے کہ تا حال نہ سیکریٹری کالج ایجوکیشن یا وزیرِ تعلیم یا کسی اور اعلیٰ عہدیدار کی جانب سے کوئی رابطہ کیا گیا ہے ۔

لہٰذا اب احتجاج کے علاوہ اور کوئی چارہ نہیں ہے۔ ملک کے دیگر صوبوں کے کالج اساتذہ کو فورٹیئر سے فائیوٹیئر کر دیا گیا ہے مگر سندھ کے کالج کو اس سے محروم رکھا گیا ہے جو کسی صورت قابلِ قبول نہیں ہے۔ سپلا کے رہنماوں نے مزید کہا کہ سندھ کے کالج ا ساتذہ کے ساتھ سوتیلی ماں والا سلوک روا رکھا جارہا ہے ۔ صوبہ بھر کے بہت سے اسسٹنٹ پرو فیسرز کو تیس سال میں صرف ایک پروموشن دیا گیا ہے جبکہ سندھ بھر کے کالجز میں تعینات بہت سے ڈائریکٹر فزیکل ایجوکیشن کو گذشتہ پچیس سال میں ایک بھی پروموشن نہیں دیا گیا ۔

مذید پڑھیں : نہاتے وقت اِن باتوں کا خیال رکھیں !

سپلا کے رہنماوں کا یہ بھی کہنا تھا کہ ترقی پانے والے لیکچرز چار ماہ سے موڈیفکیشن کے لیے دربدر پھر رہے ہیں مگر ان کو درست پوسٹنگ آرڈر جاری نہیں کیے جارہے۔اب حد تو یہ ہے کہ کالج اساتذہ سے اسسٹنٹ ڈائریکٹر کی پوسٹیں چھیننے کے لیے سات اکتوبر کو ڈی پی سی بلائی گئی ہے اگر اس ڈی پی سی کو واپس نہیں لیا گیا تو اس کے خلاف نہ صرف بھرپور احتجاج کیا جائے گا بلکہ اس کو کورٹ میں بھی چیلنج کیا جائے گا۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *