سکھر عدالت کا نو مسلمہ علیزہ کو تحفظ فراہم کرنے کا حکم

سکھر : ہائی کورٹ میں تین بچوں کی ماں نو مسلمہ خاتون علیزہ کے اسلام قبول کرنے کا بعد تحفظ کیلئے دی گئی درخواست پر سماعت ہوئی ، جس میں عدالت نے خاتون کا بیان سننے کے بعد پولیس کو تحفظ فراہم کرنے کا حکم دے دیا ہے ۔

عدالت نے خاتون کے شوہر کی مدعیت میں اغوا کے مقدمے کو خارج کر کے 22 اکتوبر کو رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیدیا ہے ۔ نو مسلمہ علیزہ خاتون نے سندھ ہائی کورٹ سکھر بینچ میں تحفظ کیلئے درخواست دائر کی تھی ۔

مذید پڑھیں : با ادب لوگ کیسے ہوتے ہیں ؟

نو مسلمہ نے عدالت کو بتایا اور اپنا بیان جمع کرایا کہ ‎کسی نے اغوا نہیں کیا ہے، اسلامی تعلیمات سے متاثر ہو کر اسلام قبول کیا ہے ۔ ینی تعلیم حاصل کر رہی ہوں، تحفظ فراہم کیا جائے ۔

جیکب آباد کی رہائشی تین بچوں کی ماں سجیل کماری نے 27 اگست کو درگاہ بھرچونڈی شریف میں اسلام قبول کیا تھا ۔ جیکب آباد سٹی تھانے پر شوہر راجیش کمار کی جانب سے نامعلوم افراد کے خلاف اغوا کا مقدمہ درج کیا گیا تھا ۔