طلبہ کا احتجاج کامیاب، جامعہ کراچی کا امتحانات کیلئے ہائبرڈ ماڈل آگیا

وائس چانسلر جامعہ کراچی نے طلبہ کی پریشانی کو کم کرنے اور مختصر دورانیے میں سلیبس کے بعد امتحانات کے لیے ہائبرڈ ماڈل امتحانات متعارف کروادیا-

واضح رہے کہ عالمی وبا کورونا وائرس کے باعث پاکستان میں گزشتہ 6 ماہ سے تعلیمی سرگرمیاں‌ معطل ہیں جن میں جامعہ کراچی بھی شامل ہے-

تاہم اب جامعہ کراچی نے اپنے طلبہ کے لیے ہائبرڈ سسٹم متعارف کروادیا ہے-

مزید پڑھیے: جامعہ کراچی کے طلباء بریسٹ کیسنر کی آگاہی کیلئے رضا کار بنیں گے

میڈیا رپورٹس کے مطابق ہائبرڈ ماڈل میں روایتی امتحانات کے طریقہ کار میں اُن تمام اسائمنٹس، پریزنٹیشنز اور دیگر سرگرمیوں کو شامل کیا جائے گا جن میں طلبہ نے آن لائن کلاسز کے دوران حصہ لیا-

ناقص منتظم آن لائن کلاسز سے پریشان جامعہ کراچی کے سیکڑوں طلبہ نے انتظامیہ کے اگلے ہفتے سمسٹر امتحانات کے انعقاد کے فیصلے پر سخت احتجاج کیا جس کے بعد وائس چانسلر نے ڈینز کا اجلاس طلب کیا-

جامعہ کراچی کے قائم مقام وائس چانسلر ڈاکٹر خالد عراقی نے بتایا کہ امتحانات میں نمبروں کی تقسیم کورس انچارج کی ذمہ داری ہوگی جو طلبہ کی پورے سیمسٹر میں کارکردگی کو دیکھتے ہوئے دئیے جائیں گے-

مزید پڑھیے:‌ جامعہ کراچی نادیہ اشرف کیس کی کمیٹی ٹوٹ گئی

واضح رہے کہ کورونا وبا کے بعد جامعہ کراچی کھلتے ہی ہزاروں طلبہ جامعہ کراچی کے انتظامی بلاک کے اندر اور باہر جمع ہوگئے اور 21 ستمبر سے سمسٹر امتحانات لینے کے فیصلے کے خلاف شدید احتجاج کیا-

طلبہ نے اس موقع پر شدید نعرے بازی کی اور مطالبہ کیا کہ جب جامعہ کراچی کے اساتذہ نے آن لائن کلاسز میں پڑھایا ہی نہیں بلکہ صرف اسائنمنٹ دیتے رہے تو اب کس بنیاد پر امتحان لیے جارہے ہیں-

طلبہ نے مطالبہ کیا کہ ہمیں انہی اسائنمنٹ کی بنیاد پر پاس کیا جائے اور اگلے سیمسٹر اور کلاسز میں پروموشن دی جائے-