کراچی کی مخدوش عمارتیں گرانے کیلئے متعلقہ افسران کو آخری نوٹس

اڑتالیس گھنٹوں کے اندر ایس بی سی اے تمام مخدوش عمارتوں کا سروے مکمل کر کے رپورٹ پیش کرے، نجم احمد شاہ، سیکرٹری لوکل گورنمنٹ ہاوئسنگ و ٹاون پلاننگ سندھ

کراچی : سیکرٹری بلدیات، ہاوئسنگ و ٹاون پلاننگ حکومت سندھ نجم احمد شاہ نے کہا ہے کہ انسانی جانوں پر کوئی سمجھوتہ قابل قبول نہیں، زمین بوس ہونے والی عمارتوں میں ضائع ہونے والی زندگیاں بہت بڑا نقصان ہے ۔

ان خیالات کا اظہار نجم احمد شاہ نے سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے دفتر میں اعلی سطحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا جس میں ان کے ہمراہ ایڈیشنل سیکرٹری ہاوئسنگ اینڈ ٹاون پلاننگ جمال الدین جلالانی بھی موجود تھے ۔

ڈی جی ایس بی سی کی جانب سے دی جانے والی بریفنگ کے بعد سیکرٹری بلدیات سندھ کا کہنا تھا کہ آئے روز گرنے والی عمارتوں کا رجحان کسی بھی صورت قابل قبول نہیں ، انسانی زندگیوں اور املاک کا نقصان بہت ہی افسوس ناک ہے۔ نجم احمد شاہ نے دوٹوک الفاظ میں کہا کہ حکومت سندھ مزید کسی انسانی جان کے ضیاع کی محتمل نہیں ہو سکتی ۔

لہذا فوری طور پر حکم دیا جاتا ہے کہ ایس بی سی اے کا ہر متعلقہ ٹاون افسر اپنے علاقے میں موجود مخدوش عمارتوں کی مکمل تفصیلات کی اڑتالیس سے بہتر گھنٹوں کے اندر رپورٹ مرتب کرے ، جس کی تفصیلی بریفنگ ڈی جی ایس بی سی اے سے کی جائے گی ،اس امر میں کوئی بھی سستی یا کوتاہی قابل قبول نہیں اور نہ ہی کوئی عذر قبول کیا جائے گا ۔

مزید پڑھیں : گلستان جوہر میں SBCA افسران نے غیر قانونی شادی ہال بنا دیا

سیکرٹری بلدیات سندھ نے سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے تمام شعبہ جات ، قوانین اور اداری جاتی ڈھانچے کا تفصیلی معائنہ کیا اور ادارے کے دائرہ کار اور اختیارات پر معلومات حاصل کیں ۔ نجم احمد شاہ نے کہا کہ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے تمام افسران اور شعبہ جات اپنی کارکردگی بہتر بنانے ہر توجہ مرکوز کریں ، شفافیت اور بروقت منصوبوں کی تکمیل ہر صورت یقینی بنائی جائے اور لوگوں کی منفعت کو ہر موقع پر مد نظر رکھا جائے۔

سیکرٹری بلدیات سندھ نے واضع کیا کہ غیر قانونی انفرا اسٹرکچرز کسی بھی صورت بننے نہیں چاہیں ، لوگوں کی جانوں اور املاک کو خطرے میں ڈالنے والے ہرگز قابل معافی نہیں ، لوگوں کی عمر بھر کی کمائی کو یوں ضائع نہیں ہونے دیا جائے گا، نجم احمد شاہ نے ڈی جی ایس بی سی اے کو حکم دیتے ہوئے کہا کہ مسمار کی جانے والی غیر قانونی عمارتوں کے خلاف ہونے والی قانونی کاروائیوں سے مکمل طور پر باخبر رکھا جائے ۔

لمحہ بہ لمحہ ہونے والی کارکردگی کے اعداد و شمار مرتب کئے جائیں اور ناجائز بلڈنگوں کے سرپرستوں، مالکان اور سہولت کاروں کو نشان عبرت بنا دیا جائے ۔ قانونی اختیارات اور دائرہ کار کا بھرپور اور مثبت استعمال کیا جائے، کسی بھی سفارش یا دباو کو قبول نہیں جائے گا ۔

مزید پڑھیں : کراچی میں غیرقانونی تعمیرات کیخلاف SBCA سمیت 33 محمکوں اور افسران کیخلاف عدالت سے رجوع ،

سیکرٹری لوکل گورنمنٹ نے واشگاف الفاظ میں کہا کہ ہر افسر اپنا فرض پوری ایمانداری اور تندھی سے سر انجام دے، جب تک غیر قانونی تعمیرات کے مرتکب افراد کے خلاف جب تک سخت ترین ایکشن نہیں ہوگا، حالات تبدیل نہیں ہوں گے، ادارے کے شعبہ قانون کو فعال بنایا جائے ، دستاویزی مراسلات اور مندرجات کو آئی ٹی سے ہم آہنگ کیا جائے، سنجیدہ بنیادوں پر ادارہ جاتی اصلاح اور بہتری کی ضرورت ہے۔

نجم احمد شاہ نے واضع کیا کہ ہر زیر تعمیر عمارت پر آغاز تا تکمیل ایک بڑے بورڈ کے ذریعے اجازت نامے اور QR کوڈ کو مشتہر کیا جائے، اور بننے والے فلورز کی تفاصیل، کورڈ ایریا اور دوسری معلومات کو بھی عام کیا جائے تاکہ ناجائز عمارات اور غیر قانونی فلورز کے رجحان کی بیخ کنی کی جاسکے۔۔ سیکرٹری بلدیات سندھ نے واضع کیا کہ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی لوگوں کی سہولت کے لئے موبائل اپلیکیشن لانچ کرے اور قانونی منصوبوں کی مناسب تشہیر کے لئے سماجی رابطوں کی ویب سائٹس اور جدید ٹیکنالوجی سے استفادہ کرے تاکہ عوام کو فراڈ اور نوسر بازوں سے نجات مل سکے۔

بعد ازاں سیکرٹری بلدیات ہاوئسنگ و ٹاون پلاننگ سندھ نجم احمد شاہ نے سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے مختلف شعبہ جات اور عوامی کاوئنٹرز کا دورہ کیا۔ اس موقع پر نجم شاہ نے لوگوں سے بات چیت کی، ان کو دستیاب سہولتوں کی فراہمی کا پوچھا اور افسران کی کارکردگی کا جائزہ بھی لیا ۔

Show More

اختر شیخ

اختر شیخ (بیورو چیف کراچی) جن کی صحافتی جدوجہد 3 دہائیوں پر مشتمل ہے، آپ الرٹ نیوز سے منسلک ہونے سے قبل آغاز نیوز ٹائم، روزنامہ مشرق، روزنامہ بشارت اور نیوز ایجنسی این این آئی کے ساتھ مختلف عہدوں پر کام کیا ہے۔ اختر شیخ کراچی پریس کلب کے ممبر ہیں اور کے یو جے (برنا) کی بی ڈی ایم کے ممبر بھی ہی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close