کھانا ڈیلیوری سروسز فراہم کرنے والی کمپنیوں کی من مانیاں عروج پر پہنچ گئیں

فوڈ پانڈا نے کمیشن 30 فیصد نہ کرنے پر کھانے کی ڈیلیوری بند کرنے کی دھمکی دی ہے، وزیر اعظم عمران خان نوٹس لیں : ایپرا

کراچی : آل پاکستان ریسٹورنٹ ایسوسی ایشن (اپرا) نے کھانے کی ڈیلیوری دینے والی کمپنیوں کی من مانیوں پرگہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ فوڈ پانڈا نے آئے دن کمیشن میں اضافے کے لیے ریسٹورنٹس کو بلیک میل کرنا معمول بنا لیا ہے ، جس کا وزیراعظم عمران خان فوری طور پر نوٹس لیں اور کھانا ڈیلیوری کرنے والی کمپنیوں کے لیے سرکاری سطح پر پالیسی وضع کی جائے تاکہ اس شعبے میں کسی قسم کی اجارہ داری کا خاتمہ کیا جا سکے ۔

اپیرا نے جمعہ کو جاری ایک بیان میں وزیراعظم عمران خان کی توجہ ریسٹورنٹس انڈسٹری کو درپیش اہم مسئلے پر مبذول کرواتے ہوئے کہا کہ ریسٹورنٹس انڈسڑی10 سے 12 فیصد منافع پر کام کرتی ہے ۔ اس کے باوجود کھانا ڈیلیوری پر فوڈ پانڈا کو 18 فیصد کمیشن دیا جاتا ہے ۔ اس کے باوجود فوڈ پانڈا کی من مانیاں دن بدن برھتی ہی جا رہی ہیں ۔

مذید پڑھیں : حب چوکی میں شاہینہ شاہین کے قتل کیخلاف احتجاجی ریلی نکالی گئی

وہ آئے دن ریسٹورنٹس پر دبا ؤ بڑھا کر اپنے کمیشن میں اضافے کی ڈیمانڈ کرتے ہیں اور اب تو ان کی بلیک میلنگ اس حد تک پہنچ گئی ہے کہ انہوں نے ریسٹورنٹس انڈسٹری کو دھمکی دی ہے کہ اگران کا ڈیلیوری کمیشن 25 فیصد سے 30 فیصد نہ کیا گیا تھا وہ کھانے کی ڈیلیوری بند کر دیں گے ۔

ایپرا کا کہنا تھا کہ کھانا ڈیلیوری کرنے والی کمپنیاں ریسٹورنٹس کے ساتھ کیے جانے والے کسی معاہدے پر عمل نہیں کرتیں اور ریسٹورنٹس کو پابند کیا جاتا ہے کہ وہ اپنے رائیڈرز کو فارغ کر دیں اور صرف ان کمپنیوں کے رائیڈرز کھانے کی ڈیلیوری دیں گے جس سے بڑی تعداد میں رائیڈرز بے روزگار ہوگئے ہیں ۔ اس کے علاوہ یہ کمپنیاں کسٹمرز کا ڈیٹا بھی لے جاتی ہیں اور پھر من پسند ریسٹورنٹس کو وہ آرڈر منتقل کر دیا جاتا ہے ۔ جس کی وجہ سے ریسٹورنٹس مالکان تنگ آ گئے ہیں اور یہ سوچنے پر مجبور ہو گئے ہیں کہ فوڈ پانڈا جیسی کمپنیوں کے ساتھ کام نہ کیا جائے ۔

مذید پڑھیں : حضرت امیرِ معاویہ پر لعن طعن کرنا دین ہے تو اپنے گھر تک خیالات کو محدود رکھیں : مفتی تقی عثمانی

ایپرا نے وزیراعظم عمران خان سے درخواست کی کہ وہ کھانا ڈیلیوری سروسز فراہم کرنے والی کمپنیوں کے لیے پالیسی مرتب کرنے کی ہدایت کریں ۔ جس کے تحت انہیں قواعد وضوابط کا پابند بنایا جا سکے ، بصورت دیگر ریسٹورنٹس انڈسٹری کے لیے کام کرنا انتہائی دشوار ہو جائے گا جو کرونا وبا کی وجہ سے پہلے ہی سنگین مالی بحران سے دو چار ہیں ۔

Show More

شعیب بھٹی

شعیب بھٹی بنیادی طور پر شعبہ مارکیٹنگ سے وابستہ ہیں اور اس شعبے میں ایک وسیع تجربہ رکھتے ہیں۔ آپ الرٹ نیوز کے ساتھ بطور رپورٹر منسلک ہیں، اس سے قبل جنگ (ویب سائٹ) میں بھی کام کر چکے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close