فضائیہ ہاوسنگ اسکیم کراچی فراڈ اسکینڈل سے متعلق لاء سوٹ کیس کی سماعت

سماعت کے دوران سادہ لباس میں نامعلوم مشتبہ افراد کورٹ روم میں داخل

کراچی () فضائیہ ہاوسنگ اسکیم کراچی فراڈ اسکینڈل سے متعلق لاء سوٹ نبمر 329/2020 اور CP:218/2020 کیسز کی مشترکہ سماعت پیر کوجسٹسں عمر سیال کی سربراہی میں کورٹ روم میں ہوئی۔

سماعت کے دوران پاک فضائیہ کے ایڈووکیٹ رشید اے رضوی کی جانب سے متاثرین کی فہرست متاثرین کے وکلاء، نعمان جمالی ایڈوکیٹ اور حسیب جمالی ایڈوکیٹ کے حوالے کرتے ہوئے لاء سوٹ دائر کرنے والے 250 متاثرین کے کوائف چیک اور کنفرم کرنے کی گزارش کی گئی۔۔

مزید پڑھیں: پاک فضائیہ کا ایف 16 طیارہ گر کر تباہ،پائلٹ شہید

پاکستان ایئر فورس، میکسم پراپرٹیز اور نیب کی جانب سے ججز پر دباو ڈالنے کے لئے سرکاری اور عسکری گاڑیوں میں سادہ لباس میں ملبوس نامعلوم افراد متاثرین کے روپ میں کورٹ روم داخل ہوگئے۔

اسی اثنا میں لاء سوٹ دائر کرنے والے 250 متاثرین بھی اپنی فیملیز اور دوستوں کے ہمراہ جسٹس عمر سیال کے کورٹ روم کے اندر پہنچنے میں کامیاب ہوگئے۔ جنہیں کورٹ سیکورٹی نے اعلی افسران کے حکم پر مین گیٹ پر ہی روک لیا۔ کورٹ روم کے اندر اور باہر موجود تمام متاثرین کو کورٹ سیکورٹی نے پہلےکورٹ روم اور پھر احاطہ نیو انیکسی بلڈنگ سے بھی باہر نکال دیا۔

مزید پڑھیں: ائیر مارشل عاصم ظہیر پاک فضائیہ کے نائب سر براہ مقرر

جب کہ مشتبہ افراد نے کورٹ روم کے اندر اور باہر ہنگامہ آرائی کی کوشش کی۔ جس کے نتیجے میں کورٹ روم کے شیشے ٹوٹ گئے۔ بعدازاں ججز کی جانب فیصلہ کیا گیا کہ کیس کی سماعت اب ججز چیمبر میں ہوگی۔

واضح رہے کہ فضائیہ ہاوسنگ اسکیم کراچی کے تمام بینک اکاوئنٹس بدستور منجمد ہی رہیں گے۔ جب کہ گزشتہ روز فیصلہ محفوظ کرلیا گیا ہے۔

دوسری جانب گزشتہ روز متاثرین کو کورٹ روم سے دور رکھنے کے لئے آج خصوصی انتظامات نظر آئے۔ پولیس کی بھاری نفری کورٹ روم کے باہر تعینات رہی، خواتین اہلکار بھی موجود تھیں۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close