پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں آسماں چھونے لگئیں.

پٹرول بحران ختم کرنے کیلئے آئل مارکیٹنگ کمپنوں اور ریفائنریوں کا مطالبہ تسلیم کیا گیا۔ پی ایس او کو یومیہ ایک ارب روپے نقصان سے نکالا گیا ہے۔

جولائی کے مہینے میں پٹرولیم مصنوعات صارفین سے 75 ارب روپے وصول کئے جائینگے۔ ملکی تاریخ میں پہلی مرتبہ عوام سے ایک ماہ کے دوران بھاری وصولی ہوگی۔

مزید پڑھیں: پٹرولیم قیمتیں اور حکومت کی گرتی ہوئی ساکھ

حکومت قیمت بڑھانے سے جولائی میں پٹرولیم لیوی کی مد میں 45 ارب روپے وصول کرے گی۔ قیمت بڑھانے سے حکومت کو جی ایس ٹی 8ارب روپے اضافے سے 25 ارب روپے ملے گا۔

آئندہ مالی سال کے دوران پٹرولیم لیوی کی مد میں 450 ارب روپے وصول کرنے کا ہدف ہے۔ رواں مالی سال میں عوام سے پٹرولیم لیوی وصولی کا ہدف 250 ارب روپے تھا۔ ریگولیٹری ڈیوٹی کی مد میں 5 ارب روپے سے زائد رقم وصول کی جائے گی۔آئندہ مالی سال پٹرولیم مصنوعات کے صارفین انتہائی بھاری ثابت ہوگا

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *