سینٹ میں نبی کریم ﷺ کے نام کے ساتھ خاتم النبین لکھنے کی قرار داد منظور ہونا خوش آئند ہے : مجلس تحفظ ختم نبوت

لاہور : عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے مرکزی ناظم نشرواشاعت مولانا عزیز الرحمن ثانی، مبلغ ختم نبوت مولانا عبدالنعیم، مولاعلیم الدین شاکر،پیرر ضوان نفیس، قاری جمیل الرحمن اختر، مولانا حافظ محمداشرف گجر، مولانا خالد محمود، مولانا عبدالعزیز، قاری ظہورالحق، قاری محمداقبال نے قومی اسمبلی کے بعد سینٹ میں جناب نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے اسم مبارک کے ساتھ ”خاتم النبیین“ لکھنا پڑھنا لازمی قرار دینے کے متعلق متفقہ قرار داد منظور ہونے پر حکومت اور اپوزیشن کے تمام ارکان کو مبارک باد پیش کی ہے

مزید پڑھیں : عالمی مجلس نے قادیانیوں کی ٹائیگر فورس میں رجسٹریشن پر تحفظات کا اظہار کردیا

پنجاب اسمبلی اور سندھ اسمبلی اور قومی اسمبلی میں آقائے نامدار صلی اللہ علیہ وسلم کی ختم نبوت کے ترانے گوجنے کے بعد سینٹ میں اس قرار داد کا متفقہ طور پر منظور ہونا بہت مبارک اور خوش آئند ہے۔

جس کو ہم تحریک ختم نبوت کی کامیابی سے تعبیر کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ آئے رو ز عالمی کفریہ ایجنڈے کے مطابق منکرین ختم نبوت قادیانیوں کو پرموٹ کیا جا رہا ہے توں توں آقا ئے نامدار صلی اللہ علیہ وسلم کی ختم نبوت کے جھنڈے بھی بلند ہورہے ہیں۔

مزید پڑحیں : قادیانیوں کی اقلیتی کمیشن میں شمولیت

حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اللہ تعالی کے آخری نبی ہیں اور ہمارا ایمان ہے کہ آپ کے بعد کوئی نبی نہیں آئے گا۔ آپ ﷺ کے بعد نبوت کا دروازہ ہمیشہ کیلئے بند کر دیا گیا ہے سینٹ سے یہ قرارد ادمنظور ہونا کہ جہاں بھی آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا نام لکھا جائے وہاں ساتھ خاتم النبین لکھاجائے خوش آئند ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہمارا ایمان ہے کہ دین مکمل ہوچکا اور نبوت کا سلسلہ رسالت مآب ﷺ پر ختم ہوچکا ہے۔اُن کا یہ بھی کہنا تھا کہ عقیدہ ختم نبوت پر ایمان لائے بغیر ایمان نامکمل ہے اورعقیدہ ختم نبوت اسلامی کے بنیادی عقائد میں سے ہے ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *