دو برس سے جنرل نرسنگ کے داخلے نہ ہو سکے

کراچی : سندھ میں نرسنگ کی تعلیم و تربیت تباہی کے دہانے پر پہنچ گئی ہے ۔ صوبے میں گزشتہ 2 سال سے جنرل نرسنگ کے داخلے نہیں ہوئے ، 10 ماہ سے نرسنگ سال اول دوم، سوم، اسپیشلائزیشن، لیڈی ہیلتھ وزیٹرز، کمیونٹی ہیلتھ نرسنگ، سرٹیفائیڈ نرسنگ اسسٹنٹ اور فیملی ویلفیئر ورکرز کے امتحانا ت نہیں ہوئے ، ہزاروں طلبا کا سال ضایع ہوگیا، 2 سال سے ہزاروں طلبا کے ڈپلومہ جاری نہیں کیے جاسکے، ملازمین کو 2 ماہ سے تنخواہیں نہیں جاری کی گئیں لیکن صوبائی محکمہ صحت ان مسائل سے لاعلم ہے ۔

مزید پڑحیں : حکومت کا بجلی اور گیس کی قیمتوں میں اضافہ نہ کرنے کا فیصلہ

ڈائریکٹوریٹ آف نرسنگ سندھ میں ڈائریکٹر نرسنگ سمیت 2 ڈپٹی ڈائریکٹرز کی نشستیں گزشتہ کئی ماہ سے خالی ہیں جس کے باعث 2 سال سے نرسنگ کے داخلے اور ہزاروں طلبا کے ڈپلومہ جاری نہیں ہوئے جبکہ ملازمین کو 2 ماہ سے تنخواہیں جاری نہیں کی گئیں ۔

دوسری جانب نرسنگ ایگزامینیشن بورڈ میں ڈپٹی کنٹرولر کی نشست خالی ہے ۔ محکمہ صحت نے نرسنگ کا پورانظام کالج آف نرسنگ جامشورو کی کلینیکل انسٹرکٹر خیرالنساء کے حوالے کر دیا ہے جو بیک وقت کنٹرولر نرسنگ ، ڈپٹی ڈائریکٹر نرسنگ اور فوکل پرسن نرسنگ ہیں لیکن اس کے باوجود 10 ماہ سے نرسنگ کے تمام شعبوں کے امتحانات کرانے میں ناکام ہیں ۔

مزید پڑحیں : ہری پور کی 5 سگی بہنیں CSS امتحان میں کامیاب

واضح رہے کہ سپریم کورٹ کے احکامات ہیں کہ آوٹ آف کیڈر اور او پی ایس پر کسی افسر کو تعینات نہ کیاجائے لیکن کالج آف نرسنگ جامشورو میں کلینیکل انسٹرکٹر کی حیثیت سے بھرتی ہونے والے خیر النساء کو اپنی پوسٹ کے بجائے نرسنگ کی تعلیم و تربیت کی اہم پوسٹوں پر تعینات کر دیا گیا ہے جو سپریم کورٹ کے احکامات کے صریح خلاف ہے اوراس سے کئی مسائل نے جنم لیا ہے ۔

صوبے بھر میں نرسز کی نمائندہ تنظیمیں ان مسائل سے پریشان اور محکمہ صحت سے نالاں ہیں ۔ ان کا کہنا ہے کہ وزیر صحت سندھ ڈاکٹر عذرا فضل پیچوہو کو جان بوجھ کر ان مسائل سے لاعلم رکھا گیا ہے اور اس ضمن میں انہیں وزیر صحت سے ملاقات بھی نہیں کرنے دی جاتی ۔

مزید پڑحیں : وفاقی حکومت کی مخالفت میں سندھ حکومت تا حال نویں تا بارہویں کے امتحانات کا فیصلہ نہ کر سکی

اس ضمن میں صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر عذرا فضل پیچوہو سے استفسار کیا تو ان کا کہنا تھا کہ کورونا ایمرجنسی کے باعث انہیں ان مسائل کا علم نہیں ہو سکا لیکن اب اس اہم مسئلے کی طرف توجہ دلائی ہے تو وہ ان تمام مسائل کو بہت جلد حل کریں گی ۔

ان کا مذید کہنا تھا کہ ڈائریکٹر ، ڈپٹی ڈائریکٹر اور ڈپٹی کنٹرولر نرسنگ کی نشستوں پر اہل افسران کو تعینات کیا جائے گا جبکہ خلاف ضابطہ افسران کو ہٹایا جائے گا۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *