کراچی: تکنیکی خرابی کے باعث پی آئی اے طیارے کو حادثہ

وزیراعظم عمران خان اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے حادثے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔

پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائن (پی آئی اے) کا طیارہ تکنیکی خرابی کے باعث کراچی میں ماڈل کالونی کے رہائشی عمارتو‌ں سے ٹکرا گیا.

پی آئی اے کے مطابق لاہور سے کراچی آنے والی پی آئی اے کی پرواز کراچی میں لینڈنگ سے 30 سیکنڈ قبل حادثے کا شکار ہوگئی جس میں کئی افراد ہلاک ہوگئے.

وزیراعظم عمران خان اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے حادثے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔

ایوی ایشن ذرائع کے مطابق پی آئی اے کی پرواز پی کے 8303 نے دوپہر 2 بجکر 40 منٹ پر جناح انٹرنیشنل ائیرپورٹ پر لینڈ کرنا تھا۔

مزید پڑھیے: پی آئی اے کے تقریباً ایک ہزار ’اضافی‘ ملازمین معطل

طیارہ لینڈنگ اپروچ پر تھا کہ کراچی ایئر پورٹ کے جناح ٹرمینل سے محض چند کلومیٹر پہلے ملیر ماڈل کالونی کے قریب جناح گارڈن کی آبادی پر گر گیا۔

سول ایوی ایشن کے مطابق طیارے میں 87 افراد سوار تھے اور جبکہ اس میں 12 عملے کے لوگ بھی موجود تھے.

ٹوئنٹی فور نیوز کے ڈائریکٹر پروگرامنگ انصار نقوی اسی جہاز پر سوار تھے جو طیارہ حادثے میں جانبحق ہوگئے.

اسی طرح کئی زخمیوں اور لاشوں کو قریبی اسپتال منتقل کیا جارہا ہے.

حادثے میں خوشقستی سے بینک آف پنجاب کے صدر اور سی ای او ظفر مسعود بھی اس طیارے میں‌ سوار تھے جو معجزانہ طور پر محفوظ رہے ہیں.

مزید پڑھیے:‌ ارشد محمود ملک ایئر فورس چھوڑ کر مستقل پی آئی اے میں آجائیں: سپریم کورٹ

سول ایوی ایشن، فائر بریگیڈ، پولیس، رینجرز اور دیگر اداروں کی جانب سے امدادی کارروائیوں میں حصہ لیا جارہا ہے.

وزیراعلیٰ‌ سندھ، وزیر صحت عذرا پیچوہو، وزیر تعلیم سندھ سعید غنی نے بھی جائے حادثہ کا دورہ کیا.

بدقسمت طیارے کے کاک پٹ اور کنٹرول ٹاور کے درمیان آخری گفتگو کی آڈیو بھی منظر عام پر آگئی ہے.

طیارے کے پائلٹ نے انجن کی خرابی کی اطلاع دی تھی، جبکہ کنٹرول ٹاور سے تعلق ختم ہونے کے بعد انہوں نے مے ڈے مے ڈے کی کال دی تھی، اس کے فورا بعد ہی حادثہ پیش آگیا.

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close