کیا مجنون آدمی کو زکواۃ دی جا سکتی ہے ؟

اگر کوئی شخص پاگل ہے اور غریب بھی ہے تو کیا اس کو زکواۃ دے سکتے ہیں

سوال
اگر کوئی شخص پاگل ہے اور غریب بھی ہے تو کیا اس کو زکواۃ دے سکتے ہیں ؟

جواب
اگر پاگل/مجنون شخص زکاۃ کا مستحق ہے تب بھی اسے زکاۃ دینے سے زکاۃ ادا نہ ہو گی، البتہ مستحق ہونے کی صورت میں اگراس کا ولی/ سرپرست اس کی طرف سے قبضہ کر لے تو زکاۃ ادا ہو جائے گی ۔

مذید پڑھیں : کیا آپ فلمی اور کرکٹ کی دنیا کے مشہور حفاظِ قرآن کو جانتے ہیں ؟

بدائع الصنائع (2/ 39):
“وكذا لو دفع زكاة ماله إلى صبي فقير أو مجنون فقير وقبض له وليه أبوه أو جده أو وصيهما جاز؛ لأن الولي يملك قبض الصدقة عنه”. فقط والله أعلم

فتوی نمبر : 144109202472

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن

Show More

شعیب بھٹی

شعیب بھٹی بنیادی طور پر شعبہ مارکیٹنگ سے وابستہ ہیں اور اس شعبے میں ایک وسیع تجربہ رکھتے ہیں۔ آپ الرٹ نیوز کے ساتھ بطور رپورٹر منسلک ہیں، اس سے قبل جنگ (ویب سائٹ) میں بھی کام کر چکے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close