جامعہ اردو : عدلیہ کے نام پر فیک نمبر سے سینیٹر کو قائمقام VC کے حق میں مہم کا حکم

جسٹس عقیل احمد عباسی کے نام پر وائس چانسلر کی مستقلی کی مہم چلانے کیلئے جعلی نمبر سے سینیٹر واجد جواد کو میسجز کئے گئے

اسلام آباد : جامعہ اردو کی سینیٹ کے اجلاس میں سینیٹ کے ممبر سینیٹر ڈاکٹر واجد جواد نے صدر پاکستان ڈاکٹر عارف محمود علوی کے سامنے تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مجھے جسٹس عقیل عباسی کے نام سے ایک وٹس ایپ میسج موصول ہوا جس میں بین السطور دھمکی دیکر قائم مقام وائس چانسلر ڈاکٹر عارف زبیر کے حق میں ہلکا ہاتھ رکھنے کا کہا گیا ہے ۔

اردو کے نام پر قائم ہونے والی پاکستان کی پہلی یونیورسٹی جامعہ اردو کی سینیٹ میں اردو کے ہی حوالے سے خدمات کے پیش نظر سینیٹ کے ممبر بننے والے ڈاکٹر واجد جواد نے پہلے اجلاس سے آخری اجلاس تک اصولی ، قانونی موقف اختیار کرنے کی وجہ سے قائم مقام وائس چانسلر ڈاکٹر عارف زبیر اور ان کو مستقل وائس چانسلر کے طور پر لانے کے لئے مہم چلانے والی لابی کو کھٹک رہے ہیں ۔

مذید پڑھیں : جیو نیوز نے قادیانیت نوازی میں حد پار کر دی

سینیٹ کے ممبر ڈاکٹر واجد جواد کو اعلی عدلیہ کے معزز جج جسٹس عقیل احمد عباسی کے نام پر دھمکی آمیر میسج سینیٹ اجلاس کے ایک دن پہلے 5 مئی کو 03097450710 کے نمبر سے موصول ہوا تھا ، جس پر وٹس ایب بھی موجود ہے ۔ میسج میں لکھا ہے کہ ’’ پیارے واجد جواد امید ہے کہ آپ خیریت سے ہونگے اور رمضان اچھا گذر رہا ہو گا ۔ میں نے آپ کو کال کرنے کی کوشش کی مگر آپ کا نمبر ریسیو نہیں ہوا ۔ برائے مہربانی جب آپ سہولت سمجھیں تو مجھے ضرور بتائیے گا تاکہ آپ سے بات ہو سکے ۔

اس میسج کے بعد وٹس ایپ کے ذریعے ہی انجمن ترقی اردو کے صدر اور جامعہ اردو کی سینیٹ کے رکن ڈاکٹر واجد جواد نے واپس 9 بج کر 22 منٹ پر آنے والے میسج کا جواب 9 بج کر 33 منٹ پر دینے کے لئے واپس کال کی گئی تو پھر جسٹس عقیل احمد عباسی کے نام سے آنے والے نمبر پر کال وصول نہیں ہوئی تاہم دوبارہ پھر ایک میسج آگیا ۔ اس میسج کے مطابق ’’ میں کورٹ روم میں کیسز کیلئے موجود ہوں ، میں آپ کو افطار کے بعد ایوننگ میں کام کروں گا ، اس دوران آپ جامعہ اردو کے سینیٹ کے اجلاس میں نرم دلی کے ساتھ اپنا کردار ادا کیجئے گا اور ڈاکٹر عارف زبیر کو سپورٹ کیجئے گا ۔

مذید پڑھیں : پاکستان کے کس علاقے میں‌ روزانہ بارش ہوتی ہے ؟

میسج کے مطابق ’’اگر آپ سمجھیں کہ آپ کو میرے یا میرے کسی ساتھی جج کی عدالت میں کسی کیس میں میری یا میرے کولیگ کے بینج میں مدد کی کوئی ضرورت ہو تو ہمیں بتائیے گا ۔ آپ کا مخلص جسٹس عقیل احمد عباسی ، سندھ ہائی کورٹ ‘‘ ۔ اس کے بعد ایک بار پھر ڈاکٹر واجد جواد نے کال کی تاہم ایک منٹ کے اندر یہ ٹائپ شدہ میسج بھی موصول ہوا اور کال بھی ریسیو نہیں کی جا سکی ۔ حیرت انگیز طور پر یہ میسج اور اس کو پرنٹ لیکر صدر پاکستان کو دیکھایا اور بتایا گیا تاہم ابھی تک اس پر کوئی ایکشن نہیں لیا گیا ہے ۔

واضح رہے کہ جس نمبر سے جسٹس عقیل احمد عباسی کا نام استعمال کیا گیا ہے ان کا نمبر یہ ہے ہی نہیں ، جس نمبر سے میسج کیا گیا ہے وہ نمبر امیر حمزہ ولد عبدالطیف فرقانی نے نام پر ہے ، امیر حمزہ ڈھوک ماہلہ ، ڈاک خانہ نکہ خورد ،تحصیل و ضلع جہلم کا رہایشی ہے ۔ جبکہ اس جاز کمپنی کا یہ نمبر ٹیلی نار پر کنورٹ کیا گیا ہے ۔ مذکورہ نمبر کس موبائل نمبر میں استعمال ہوا ، وہ موبائل کہاں سے خریدا گیا ، کون سی آئی پی استعمال ہوئی ہے ،یہ تمام تفصیلات حاصل کر لی گئی ہیں ۔

مذید پڑھیں : نصف صدی دین کی خدمت کرنے والے مفتی سعید احمد پالنپوری انتقال کر گئے

معلوم رہے کہ ڈاکٹر واجد جواد کو اردو کے لئے عظیم خدمات کی وجہ سے 4 اپریل 2019 کو انجمن ترقی اردو کا صدر منتخب کیا گیا تھا ۔اسی وجہ سے انہیں سینیٹ کا بھی ممبر منتخب کیا گیا ہے ۔

دوسری جانب جامعہ اردو کے انجمن اساتذہ کراچی گلشن کیمپس ، عبدالحق کیمپس اور اسلام آباد کیمپس نے اس واقعہ کی شدید مذمت اور عدلیہ کو اس پر نوٹس لینے اور ملوث افراد کو قرار واقعی سزا دینے کا مطالبہ کیا گیا ہے ۔ ادھر الرٹ نیوز کو معلوم ہوا ہے کہ جامعہ اردو کو موجودہ ایڈھاک انتظامیہ کی جانب سے مختلف اساتذہ ، مخالفین اور خبریں شائع کرنے والوں کو مقتدر اداروں کے نام پر دھمکانے کا سلسلہ بھی جاری ہے ۔

Show More

عزت اللّٰہ خان

عزت اللّٰہ خان سینئر رپورٹر ہیں، پشاور پریس کلب کے ممبر ہیں، بعض موضوعات پر ان کی تحقیقاتی رپورٹس صف اول کے اخبارات میں تہلکہ مچا چکی ہیں۔ سرکاری اداروں میں کرپشن پر ان کی گہری نظر ہوتی ہے، معروف ویب سائٹس پر ان کے معاشرتی پہلوؤں پر بلاگز بھی شائع ہوتے رہے ہیں، آج کل الرٹ نیوز کے لیے لکھتے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close