نعت کی کرامت

جونہی نعت کی لے بلند ہوئی، درد غائب ہوتا محسوس ہوا

کتابی کرامتیں بہت پڑھ رکھی ہیں، کرامتوں کی سینہ گزٹ کہانیاں بھی بہت سنی ہوئی ہیں، پہلے کبھی اگر ان کا قائل تھا تو رفتہ رفتہ بڑھتی ہوئی ریشنلسٹ اپروچ کی زد میں آ کر ان پر اعتقاد کی عمارت بری طرح متزلزل ہو کر رہ گئی ہے، مگر جادو وہ جو سر چڑھ کر بولے۔

کل عجیب واقعہ پیش آیا، جسے کسی حد بیان تو کر سکتا ہوں، مگر اس کی توجیہ میرے بس کی بات نہیں۔ میں طویل عرصے سے پنڈلیوں میں شدید درد کا مریض ہوں۔ کل دوپہر کو حسب معمول کام میں مصروف تھا کہ ایک بار پھر دردِ دیرینہ نے دھیمے دھیمے انگڑائی لی اور کچھ ہی دیر میں بری طرح بے کل کرکے رکھ دیا۔ کافی دیر سیٹ پر کسمساتا رہا ۔تھوڑی تھوڑی دیر میں اٹھ کر ٹہلنے لگتا، مگر کسی پل چین ملا نہ قرار۔ سوچنے لگا کام اسسٹنٹ کے سپرد کرکے اٹھ ہی چلوں۔

مذید پڑھیں :آل سندھ پرائیویٹ اسکولز اینڈ کالجز ایسوسی نے تعلیم بچائو تحریک کا اعلان کر دیا

درد سے دھیان ہٹانے کیلئے موبائل فون کی گیلری میں آوارہ خرامی کر رہا تھا کہ اچانک ایک کھوار نعت پر انگلیوں کے ساتھ دل بھی اٹک کر رہ گیا۔ سوچا درد کا احساس بھٹکانے کےلئے نعت لگا لیتا ہوں…. مگر یہ کیا…. جونہی نعت کی لے بلند ہوئی، درد غائب ہوتا محسوس ہوا ۔

”ہُوں…. یہ کیا بات ہوئی…. کیا واقعی!“ دل ہی دل میں بے یقینی بڑبڑائی۔ باقاعدہ دھیان دیا تو یہ احساس یقین میں بدلنے لگا کہ واقعی نعت شروع ہوتے ہی درد کی جگہ سکون آن وارد ہوا ہے ۔ نعت آگے بڑھتی رہی اور ساتھ ہی طبعیت میں نشاط، تازگی اور سکون بھی لشکر در لشکر اترنے لگے۔ تھوڑی ہی دیر میں طبعیت بحال ہوگئی اور ہشاش طبیعت کے ساتھ کام ایسا نمٹایا کہ پتا ہی نہ چلا۔

مذید پڑھیں : اطالوی خاتون نے اغوا کاروں کے حسنِ سلوک سے اسلام قبول کر لیا

خدا جانے آپ میں سے کسی کے ساتھ ایسا تجربہ ہوا ہے یا نہیں، میرے لیے بہر حال یہ تجربہ بہت انوکھا اور حیران کن تھا۔ مجھے تو اس تجربے نے ایک بار پھر کرامت کا ہلکا سا قائل کر دیا ہے۔

نسیما جانبِ بطحا گزر کن
زِ احوالم محمد را خبر کن

Show More

عنایت شمسی

عنایت شمسی روزنامہ اسلام میں ایڈیٹوریل بورڈ سے وابستہ ہیں اور سینئر سب ایڈیٹر بھی ہیں۔ آپ کا شمار بہترین لکھاریوں میں ہوتا ہے۔ معاشرتی مسائل پر بہترین نکات لکھتے ہیں۔ آپ کے قلم سے درجنوں کتابوں تیار ہو کر مارکیٹ ہو چکی ہیں۔ آپ نے الرٹ نیوز کیلئے خصوص بلاگ لکھنے کا سلسلہ شروع کیا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close