قادیانی مرزا مسرور پر قادیانیوں نے خود ہی حملہ کر دیا

قادیانی مربی نے پیغمام جاری کیا ہے کہ گھر میں میٹ سے پائوں پھسلا ہے جس کی وجہ سے جمعہ کا لیکچر نہیں دے سکوں گا

اسلام آباد : قادیانی مربی مرزا مسرور کے سابق گارڈ کے بیٹے نے ہی اپنے مربی پر حملہ کر دیا ۔

قادیانیوں کے ترجمان اخبار نے دعوی کیا ہے کہ قادیانی مربی مرزا مسرور گھر میں میٹ سے پھسلے ہیں , جس کی وجہ سے پکی جگہ ہر جا کر گرے اور اس کی وجہ سے انہیں ناک اور ماتھے پر چوٹیں لگی ہیں ۔ اس کی وجہ سے جمعہ کا لیکچرر دینے بھی نہیں آئے ۔ جب کہ حقیقت میں مرزا مسرور کی ناک کی ہڈی ٹوٹی ہے اور ہاتھ بھی زخمی ہوا ہے ، جس کو چھپایا جا رہا ہے ۔ جس کی وجہ سے مزرا مسرور جمعہ کا لیکچر دینے کے لئے بھی نہیں آ سکا ہے ۔

مذید پڑھیں : صحافت اور دھندہ !

مزرا مسرور اور اس کے سابق سیکورٹی گارڈ لالا ناصر گجر کے بیٹے کے مابین اصل تنازعہ بہشتی مقبرے کی زمین اور اس سے حاصل ہونے والے چندے کا تھا ۔ مرزائیوں نے بہشتی مقبرے واقع چناب نگر میں سرکاری زمین پر قبضہ کیا ہے جہاں اپنے لوگوں سے پیسے لیکر وہاں قادیانیوں کی تدفین کی جاتی ہے جس کو بہشتی مقبرہ کہا جاتا ہے ۔ دفاع ختم کونسل کے قاری ضیا اللہ سیالوی کی جانب سے اس بہشتی مقبرے کی حقیقت کو چند ماہ قبل منظر عام پر لایا گیا تھا جس کے بعد قادیانیوں کے مابین پھوٹ پڑ گئی ہے ۔

لالا ناصر گجر کے بیٹے نے مرزا مسرور کو  بدھ کے روز کہا کہ میرے والد نے ساری زندگی آپ کی خدمت کی ، اس کے بعد بھی اس کی تدفین پیسے لیکر سرکاری زمین یعنی بہشتی مقبرہ میں تدفین  کی گئی ہے ۔ معلوم رہے قادیانی اس نام نہاد بہشتی مقبرے میں اپنے مردوں کو دفنانے کے نام پر پیسے اپنے ہی لوگوں سے پیسے لیتے ہیں ، لالا ناصر گجر کے بیٹے نے مرزا مسرور سے سوال کیا کہ ہم اس مقبرہ میں دفنانے کے پیسے دیتے ہیں جب کہ پاکستان سے خبریں آ رہی ہیں کہ یہ سرکاری زمین پر قبضہ کی جگہ ہے ۔جس پر مرزا مسرور اور لالا ناصر گجر کے بیٹے میں تلخ کلامی ہو گئی اور یوں بات ہاتھا نوبت پہ آئی جس کی وجہ سے مرزار مسرور کو چوٹیں آئی ہیں ۔

مذید پڑھیں : محکمہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے 2 ڈپٹی ڈائریکٹرز کا جعلی اسناد پر بھرتی کا انکشاف

گزشتہ دنوں دفاع ختم کونسل کے چیئرمین علامہ قاری ضیا اللہ سیالوی نے وقار ذکا کے پروگرام میں قادیانی ترجمان سلیم الدین کو قادیانی مناظر ڈاکٹر یحیحی کے توسط سے چیلنج کیا تھا کہ وہ اس قبرستان کی ملکیتی دستاویزات دکھا دیں تو میں اپنے بیان سے رجوع کر لوں گا ۔ جس کے باوجود ابھی تک کوئی دستاویز اس بارے میں نہیں دکھائی گئی ۔

ادھر قادیانی مربی مرزا مسرور نے روزنامہ الفضل پر اپنا بیان جاری کیا ہے کہ گھر میں پائوں پھسلنے سے پکی جگہ پر گرا ہوں جس کی وجہ سے ناک ، پیشانی پر چوٹ لگی ہیں ، جس کی وجہ سے جمعہ میں نہیں آ سکوں گا ، ڈاکٹروں کا بھی مشورہ ہے کہ آرام کیا جائے ۔ جب کہ حقیقت مین اس کے سابق سیکورٹی گارڈ لالا ناصر گجر کے بیٹے نے پیسوں کے لین دین کی وجہ سے اسے مارا ہے ۔

مذید پڑھیں : قادیانیت نوازی کی وجہ سے خیبر پختون خوا کے رہنما نے PTI چھوڑ دی

ادھر قادیانیوں مربیوں نے مرزا مسرور کا موبائل اپنے پاس رکھ لیا ہے تاکہ مرزا سے رابطے کرنے والوں کو کسی بھی طرح اس حملے کی بھنک نہ پڑے ، مرزا مسرور کے ملازمیین کی چھٹیاں بھی منسوخ کر دی گئی ہیں اور اس کے گھر میں بھی اس جھگڑے کو چھپانے کے لئے نئی باتیں گھڑی جا رہی ہیں تاہم لندن میں متعلقہ پولیس کی جانب سے بھی لالا ناصر گجر کے بیانات بھی قلمبند کئیے جا چکے ہیں ۔

حیرت انگیز طور پر ابھی تک مرزا مسرور کا زخمی حالت میں ہی سہی کوئی ویڈیو بیان جاری نہیں کیا گیا ، اور دوسری جانب ناصر گجر کے بیٹے کا بھی کوئی بیان نہیں آیا ہے ، کیوں کہ اسے بھی پیسے دیکر  راضی کرنے کے لئے لندن کے تاجروں درمیان میں آ گئے ہیں ۔ معلوم رہے کہ پھلسنے سے اندورانی چوٹ آتی ہے کیوں کہ پر پھسلن سے اندرونی چوٹ زیادہ اور ظاہری چوٹ کم ہوتی ہے جبکہ مار پیٹ کی سامنے چوٹ زیادی ہوتی ہے ، کیوں کہ ناصر گجر کے بیٹے نے سامنے مکے مارے ہیں جس کی وجہ سے ناک ،پیشانی اور بازو پ چوٹیں آئی ہیں ۔

Show More

عزت اللّٰہ خان

عزت اللّٰہ خان سینئر رپورٹر ہیں، پشاور پریس کلب کے ممبر ہیں، بعض موضوعات پر ان کی تحقیقاتی رپورٹس صف اول کے اخبارات میں تہلکہ مچا چکی ہیں۔ سرکاری اداروں میں کرپشن پر ان کی گہری نظر ہوتی ہے، معروف ویب سائٹس پر ان کے معاشرتی پہلوؤں پر بلاگز بھی شائع ہوتے رہے ہیں، آج کل الرٹ نیوز کے لیے لکھتے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close