محکمہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے 2 ڈپٹی ڈائریکٹرز کا جعلی اسناد پر بھرتی کا انکشاف

کراچی : چیف سیکرٹری سندھ نے محکمہ انفارمیشن و ٹیکنالوجی کے گریڈ 18 کے 2 ڈپٹی ڈائریکٹرز کے خلاف مسلسل شکایات موصول ہونے اور انکوائری مکمل ہونے کے باوجود مزید کوئی کارروائی نہ کیئے جانے کا نوٹس لے لیا ہے اور اس ضمن میں دونوں افسران کے بارے میں تفصیلی رپورٹ طلب کر لی ہے۔

الرٹ نیوز کے ذرائع کے مطابق جعلی تعلیمی ظاہر کر کے مبینہ طور پر ملازمت حاصل کرنے اور ترقیاں لینے پر وزیراعظم عمران خان کے سیٹیزن پورٹل سے کارروائی کا لیٹر موصول ہونے پر چیف سیکرٹری ممتاز علی شاہ نے انفارمیشن ٹیکنالوجی ڈپارٹمنٹ کے دو ڈپٹی ڈائریکٹرز اطہر حسین بلوچ اور ساجد انور سیہڑ کا سروس ریکارڈ اور ان کے بارے میں جاری انکوائری کے حوالے سے رپورٹ طلب کی ہے ۔

مذید پڑھیں : علامہ ڈاکٹر خالد محمود ؒ کون تھے ؟

چیف سیکرٹری نے اپنے ریمارکس میں یہ بھی کہا کہ اگر انکوائری مکمل کر لی گئی تو ان شکایات مزید کیا کارروائی کی گئی ہے ۔ ذرائع نے الرٹ نیوز کو بتایا ہے کہ چیف سیکرٹری نے حکم دیا ہے کہ صوبے کے محکموں میں جاری تمام محکمہ جاتی انکوائریز کو ترجیحی بنیاد پر نمٹایا جائے ۔

شکایات اور انکوائری کے دوران ایسے افسران کو ترقیاں نہ دی جائیں ۔ الرٹ نیوز کے ذرائع کا کہنا ہے کہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ڈپٹی ڈائریکٹر ٹیکنیکل اطہر حسین بلوچ پر الزام ہے کہ انہوں نے اپنی دستاویزات میں جس بین الاقوامی یونیورسٹی کی ڈگری پیش کی ہے اس کے بارے میں ہائر ایجوکیشن کمیشن نے واضح کر دیا ہے کہ وہ کمیشن کی تسلیم کردہ یونیورسٹی نہیں ہے ۔

مذید پڑھیں : جمیعت علمائے اسلام کے رہنما مولانا گل حسن زئی پر دن دیہاڑے حملہ

اسی طرح گریڈ 18 کے افسر ڈپٹی ڈائریکٹر امپلی منٹیشن اینڈ کورآرڈینیشن ساجد انور سیہڑ نے ایم اے سوشیالوجی کی جو ڈگری پیش کی ہے ، شاہ عبداللطیف بھٹائی یونیورسٹی کے کنٹرولر امتحانات نے اسے جعلی قرار دیتے ہوئے رپورٹ دی تھی کہ سجاد انور اس یونیورسٹی کے ماسٹر کے امتحان میں فیل ہو چکے تھے ۔الرٹ نیوز کے ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق سیکرٹری آئی ٹی نے انکوائری مکمل کر کے رپورٹ بھی دے دی تھی لیکن اثر و رسوخ کی وجہ سے اس پر کوئی کارروائی نہیں کی جا سکی تھی ۔

اس ضمن میں ڈپٹی ڈائریکٹر ٹیکنیکل اطہر حسین بلوچ کا کہنا ہے کہ میری ڈگری اس یونیورسٹی کی ہے جس کا قیام ہائر ایجوکیشن کمیشن کے قیام سے قبل آیا تھا ۔ جب کہ ڈپٹی ڈائریکٹر امپلی منٹیشن اینڈ کورآرڈینیشن ساجد انور سہیڑ نے رابطہ کرنے پر اپنا موقف دینے سے گریز کیا ہے ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *