قائمقام وائس چانسلر نے SMIU کے اساتذہ کو بھی دھمکانا شروع کر دیا

سندھ مدرستہ الاسلام یونیورسٹی کے اساتذہ کو قائم مقام وائس چانسلر ڈاکٹر محمد علی شیخ کی طرف سے بلا جواز وضاحتی نوٹس جاری ہونے کا سلسلہ نہ رک سکا ۔ جیل بھیجنے کی بھی دھمکیاں دی جارہی ہیں ۔

آن لائن ٹریننگ کے دوران ڈائریکٹر کوالٹی انہانسمینٹ سیل کے مبینہ غیر اخلاقی رویے پر اساتذہ نے جامع کے واٹس ائپ گروپ پر شکایت کی ہیں جس کے جواب میں قائم مقام وائس چانسلر ڈاکٹر محمد علی شیخ آگ بگولا ہو گئے ۔ اگلے ہی روز آن لائن ٹریننگ کا سیشن بلوا کہ فیکلٹی ممبران کو ڈانٹ پلائی اور انہیں غنڈہ کہہ کر مخاطب کیا اور ساتھ ہی وضاحتی نوٹس بھی بھیج دیئے ہیں ۔

مذید پڑھیں : قائمقام VC محمد علی شیخ نے پہلے ہی گھنٹے میں ڈائریکٹر فنانس کو نوکری سے برخاست کردیا

اساتذہ کی جانب سے ایک مہذب شکایت کے جواب میں سنگین الزام لگاتے ہوئے قائم مقام وائس چانسلر ڈاکٹر محمد علی شیخ نے گرفتار کروانے اور نوکری سے برخاست کرنے کی بھی دھمکیاں دی ہیں ۔ قائم مقام وی سی ڈاکٹر محمد علی شیخ پچھلے دو ماہ سے آپے سے باہر ہو گئے ہیں ۔ پہلے ڈائریکٹر فنانس کو جبری طور پہ نکالا ، جسے یونیورسٹیز اینڈ بورڈز سیکریٹریٹ نے واپس بحال کیا ، لیکن اس بحالی کے حکم کو محمد علی شیخ نے ماننے سے انکار کر دیا ہے ۔ پھر رجسٹرار کو برطرف کیا ۔ جس کو عدالت نے بحال کیا ۔ اور اب اس توپ کا رخ معزز اساتذہ کی طرف ہے ۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ریٹائر شدہ قائم مقام وائس چانسلر کی انا پرستی اور غیر قانونی اقدام کے باعث جامع کے اساتذہ و دیگر کو سخت ذہنی دباؤ کا سامنا ہے ۔ ساتھ ہی ملک کے اساتذہ حلقوں میں شدید غم و غصے کی لہر ہے ۔ حیرت انگیز طور پر فپواسا کی جانب سے اس حوالے سے کوئی بھی مذمتی بیانات کی حد تک بھی کوئی کارروائی نہیں کی جارہی ہے ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *