جب بل گیٹس کے منہ پر کیک پڑا

for feature image

بل گیٹس کا نام تو آپ سب نے ہی سن رکھا ہوگا، اور اس کے کام اور دولت کے بارے میں بھی سب آگاہ ہیں، لیکن ایک چیز جو شاید بہت ہی کم لوگوں کو معلوم ہے وہ ان کا جوتا یا ٹماٹر کلب میں شامل ہونا بھی ہے.

ناقدین کی سیاسی حریفوں پر ٹماٹر یا انڈے برسانے یا پھر جوتا پھینکنے کی روایت کے بارے میں ہم سب جانتے ہیں، صدر بش سے لے کر صدر ٹرمپ تک امریکی صدور بھی اس کا نشانہ بنتے آئے ہیں.

لیکن ماضی میں‌ دنیا کے اس وقت کے امیر ترین شخص بل گیٹس بھی اس کا نشانہ بن چکے ہیں؟ ایسا ہم میں سے شاید چند ہی لوگ جانتے ہوں گے.

مزید پڑھیے: بل گیٹس کا کورونا وائرس کے بارے میں خطرناک انکشاف

یہ بات ہے فروری 1998 کی جب مائیکروسافٹ کے بانی بیلجیئم کی دارالحکومت برسلز پہنچے، جہاں انہوں تعلیم دانوں‌ کو تعلیم سے متعلق لیکچر دینا تھا.

برسلز میں‌ جب بل گیٹس اپنی گاڑی سے اترے تو لوگوں کی بات کا جواب دیتے ہوئے سرکاری عمارت میں داخل ہورہے تھے.

بل گیٹس جیسے ہی عمارت کے اندر داخل ہونے والے تھے عین اسی وقت ایک شخص جو پہلے ساکن کھڑا تھا اچانک سے اپنے ہاتھ میں‌ موجود کیک بل گیٹس کے منہ پر دے مارا.

مزید پڑھیے:‌ بل گیٹس نے مائیکرو سافٹ کے حوالے سے بڑا فیصلہ کرلیا

یہ کیک منہ پر پڑتے ہی بل گیٹس کا منہ اور کپڑے خراب ہوگئے، لیکن وہ طیش میں آئے بغیر ہی اندر کی جانب چلتے گئے اور ان کے پروٹوکول نے انہیں گھیرے میں لےلیا.

کیک مارنے والے شخص کی شناخت نوئل گوڈن کے نام سے ہوئی جن کے بارے میں مشہور تھا کہ وہ بڑی شخصیات کے ساتھ ایسا بیہودہ مذاق کرتے ہیں تاکہ انہیں ‌شہرت مل سکے.

مائیکرو سافٹ کے بانی نے اس شخص کے خلاف کوئی کیس نہیں‌ کیا اور اسے معاف بھی کردیا، جبکہ اپنے ایک بیان میں‌ بل گیٹس نے کہا تھا "کیس مزیدار نہیں تھا”.

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *