ہری پور سبزی منڈی کے آڑھتیوں کو آڑے ہاتھوں لینے کی تیاری مکمل

ہری پور انتظامیہ اور سبزی منڈی یونین نے آڑھتیوں کو منڈی کا صحن خالی کرنے کا نوٹس دے دیا ۔ عوام الناس نے شکایات کی تھیں کہ منڈی کے آڑھتی چھپرے کے اندر اپنا سامان رکھیں بصورت دیگر جرمانہ کیا جائے گا ۔

ہری پور کی انتظامیہ اور سبزی منڈی یونین نے بالآخرعوامی شکایات سن ہی لیں ۔ سبزی و فروٹ منڈی کے آڑھتیوں کو منڈی کا صحن فوری خالی کرنے اور تمام اشیاء زیر چھپرہ کرنے کے نوٹس تھما دیئے گئے ہیں ۔ خلاف ورزی کی صورت میں 20 ہزار روپے جرمانہ گاڑیوں کی ضبطی ، ڈرائیور اور آڑھتیوں کو پابند سلاسل کرنے کا پروانہ جاری کیا گیا ہے ۔ اس کے بعد انجمن حقوق آڑھتیاں کی جانب سے بھی نوٹس نکالا گیا ہے ۔

مذید پڑھیں : ڈونلڈ ٹرمپ بھی شمالی کوریا کے صدر کی موت و حیات کا پتہ نہ لگا سکا

ہفتہ 25 اپریل کو مقامی پولیس انتظامیہ کے افسران نے عوامی شکایات پر آڑھتیوں کی جانب سے سبزی منڈی کے کئی کنال پر محیط صحن پر قبضے، آئے روز کے جھگڑوں ، منہ زور آڑھتیوں کی بد زبانی اور بد ترین ٹریفک جام کے دیرینہ مسئلے کے حل کے لیئے اندرون سبزی منڈی کے دورے کیئے جہاں یونین کے عہدیداروں کے ساتھ ملاقات کی ۔ جہاں پر پولیس نے منڈی یونین سمیت تمام آڑھتیوں کیلئے نیا نامہ حکم جاری کیا ۔

سبزی منڈی تاجران کو صحن خالی کرنے کے لیے جاری نوٹس کا عکس

پولیس کی جانب سے دیئے گیئے نوٹس میں کہا گیا ہے کہ بڑی مال بردار گاڑیوں کو صبح چار بجے سے دن بارہ تک منڈی میں داخلے اور مال اتارنے کی پابندی ہو گی ۔ علاوہ ازیں کوئی بھی آڑھتی اپنا ساز و سامان چھپرے کی حدود سے باہر رکھنے ، بیچنے اور ترپال کھولنے کا مجازنہیں ہو گا ۔ خلاف ورزی کی صورت میں سخت قانونی کارروائی کا سامنا کرنا ہو گا ۔ عوامی حلقوں میں مقامی انتظامیہ اور منڈی یونین کے اس اقدام کو سراہا جا رہا ہے ۔ تاہم ان اقدامات پر یکساں اور بلا امتیاز عملدرآمد کے حوالے سے شدید تحفظات کا اظہار بھی کیا ہے ۔
مذید پڑھیں : ہری پور میں چیف سینیٹری انسپکٹر کی دوبارہ تعیناتی کے بعد صفائی کے مسائل بڑھ گئے

ادھراس حوالے سے جب مقامی آڑھتیوں سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے مستقل بنیادوں پر مذکورہ مسئلے کے حل کی حمایت کی ہے۔ تاہم ان کا کہنا تھا کہ سابقہ تجربات کی طرح کسی کو چھوڑ دو اور کسی کو دبوچ لو ، کی پالیسی قابل قبول نہیں ہو گی۔ ضلعی انتظامیہ سوموار کو منڈی موڑ (سابقہ چونگی)سے مستقل اور بے لاگ آپریشن کا آغاز کرے مکمل اور بھرپور تائید کریں گے ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *